اسلام آباد ۔ 15 اگست (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی قابض افواج کی بھاری تعداد میں موجودگی بھی نوجوان کشمیریوں کو پاکستان کی آزادی کا جشن منانے اور اس کیلئے تیاریاں کرنے سے باز نہیں رکھ سکی۔یوتھ فورم فار کشمیر سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ کشمیر پاکستان کی آزادی کا نامکمل حصہ ہے۔ کشمیریوں نے 19 جولائی 1947ءکو سرینگر میں ایک قرارداد منظور کی تھی جس میں پاکستان کے ساتھ الحاق کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ کشمیری رہنماو¿ں نے یہ قرارداد پاکستان کی آزادی سے ایک ماہ پہلے منظور کی تھی۔ بھارتی یومِ آزادی کو پوری دنیا میں کشمیری یومِ سیاہ کے طور پر مناتے ہیں، بھارت کے پاس اپنی آزادی کا دن منانے کا کوئی اخلاقی یا قانونی جواز باقی نہیں بچتا کیونکہ دوسری طرف وہ خود کشمیریوں کی علاقائی، شخصی، نظریاتی، غرض یہ کہ ہر طرح کی آزادی پر قابض ہے، اگر دنیا یہ دیکھنا چاہتی ہے کہ کشمیری کیا چاہتے ہیں تو انہیں یہ ضرور دیکھنا چاہئے کہ کشمیری 14 اگست کو پاکستان کا جشنِ آزادی کتنے جوش و جذبے سے مناتے ہیں جبکہ 15 اگست بھارت کے یومِ آزادی کو یومِ سیاہ کے طور پر مناتے ہیں۔ ہم سلامتی کونسل پر زوردیتے ہیںکہ وہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوںکو بند کرائے جہاں بھارت کی مسلح قابض فوج ماورائے عدالت ہلاکتوں، جبری گمشدگیوں، جنسی زیادتیوں اور بنیادی شہری آزادیاں سلب کر نے میں ملوث ہے، ہم زور دیتے ہیں کہ دنیا کو مسئلہ کشمیرکے حل کیلئے اپنا کردار ادا کرنا چاہئے تاکہ خطہ میں دیرپا امن قائم ہو۔