اسلام آباد ۔ 24 جون (اے پی پی) وزیراعظم عمران خان نے ریگولیٹری فریم ورک اور رجسٹریشن کے عمل کو سہل بنانے کےلئے پاکستان ریگولیٹری ماڈرنائزیشن انیشی ایٹیو (پی آر ایم آئی) کو موجودہ حکومت کے اصلاحاتی ایجنڈے کا اہم جزو قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ریگولیشن کے عمل میں بہتری لانے اور اسے جدید طرز پر استوار کرنے کا مقصد کاروباری طبقہ کو سہولت فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے یہ بات پیر کو ”پاکستان ریگولیٹری ماڈرنائزیشن انیشی ایٹیو“ سے متعلق اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ اجلاس میں وزیراعظم کے مشیر محمد شہزاد ارباب، مشیر تجارت عبدالرزاق داو¿د، مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ، معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان، معاون خصوصی یوسف بیگ مرزا، چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی و دیگر شریک تھے۔ اجلاس میں مشیر برائے اسٹیبلشمنٹ محمد شہزاد ارباب کی جانب سے پی آر ایم آئی کے حوالہ سے تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ اس اقدام کا مقصد کاروبار کے سلسلہ میں ضروری مراحل جیسے کہ رجسٹریشن، پرمٹ، اجازت نامے وغیرہ کو آسان بنانا ہے تاکہ جہاں مختلف اور غیر ضروری عوامل اور اجازت ناموں کو ختم کیا جا سکے وہاں کاروبار کی رجسٹریشن کو سہل بنا دیا جائے تاکہ کاروباری برادری بغیر کسی دقت کاروباری سرگرمیاں سرانجام دے سکے۔ پاکستان ریگولیٹری ماڈرنائزیشن انیشی ایٹیو (پی آر ایم آئی) ملکی تاریخ میں پہلی دفعہ صوبوں کی مشاورت و معاونت سے قومی سطح پر اٹھایا جانے والا اقدام ہے جس کا مقصد ریگولیٹری فریم ورک اور رجسٹریشن کے عمل کو سہل بنانا ہے تاکہ کاروباری طبقہ کےلئے آسانیاں پیدا کی جا سکیں۔