اسٹیٹ بینک نے آئی ٹی برآمد کنندگان اور فری لانسرز کو سہولت دینے کے لئے نئے اقدامات متعارف کرادئیے

State Bank of Pakistan

کراچی۔ 23 اکتوبر (اے پی پی):اسٹیٹ بینک نے آئی ٹی برآمدات اور آئی ٹی سے متعلقہ خدمات کو پروان چڑھانے کی غرض سے آئی ٹی برآمد کنندگان کو سہولت دینے کے لئے برآمدکنندگان کے خصوصی فارن کرنسی (ای ایس ایف سی)اکاونٹس میں برآمدی آمدن رکھنے کی حد 35سے بڑھاکر 50فیصد کرنے کی اجازت دے دی ہے،

مزید یہ کہ اسٹیٹ بینک یا بینکوں کی پیشگی اجازت کے بغیر برآمدکنندگان کے خصوصی فارن کرنسی اکائونٹس میں موجود رقوم کو ادائیگیوں کے لیے استعمال کی اجازت دے کر آسانی پیدا کردی گئی ہے۔ مرکزی بینک سے پیر کو جاری اعلامیہ کے مطابق برآمد کنندگان کو ای ایس ایف سی اکائونٹس سے آن لائن ادائیگیوں میں مدد دینے کی خاطر بینکوں کو انہیں ڈیبٹ کارڈز کے اجرا میں سہولت دینے کی بھی ہدایت کردی گئی ہے۔

مزید برآں فری لانسرز کو بینک اکائونٹس کھولنے اور انہیں اپنے فارن کرنسی اکائونٹس میں زیادہ رقوم رکھنے کی اجازت کے حوالے سے مزید آسانی پیدا کرنے کے لئے ایک نیا فریم ورک تشکیل دے دیا گیا ہے۔ جس کی مدد سے فری لانسرز اب کم از کم دستاویزی شرائط کے ساتھ اپنی مرضی سے ڈیجیٹل یا نارمل اکائونٹس کھول سکیں گے۔پاکستانی روپے میں بنیادی اکائونٹ کے ساتھ ہی ان کے ای ایس ایف سی اکائونٹس کھول دئیے جائیں گے۔ فری لانسرز اپنے ای ایس ایف سی اکائونٹس میں ہر ماہ 50فیصد تک برآمدی آمدنی یا پانچ ہزار ڈالر(جو بھی زیادہ ہوں)رکھنے کے مجاز ہیں اور اسٹیٹ بینک یا بینکوں کی پیشگی اجازت کے بغیر ان اکائونٹس سے تمام ادائیگیاں کرسکتے ہیں۔