بدقسمتی سے کرپشن ہمارے معاشرے میں ایک ناسور کی طرح سراہیت کر چکی ہے، نگران صوبائی وزیر تعلیم پروفیسر ڈاکٹر قادر بلوچ کا تقریب سے خطاب

بدقسمتی سے کرپشن ہمارے معاشرے میں ایک ناسور کی طرح سراہیت کر چکی ہے، نگران صوبائی وزیر تعلیم پروفیسر ڈاکٹر قادر بلوچ کا تقریب سے خطاب

کوئٹہ۔ 28 نومبر (اے پی پی):نگران صوبائی وزیر تعلیم پروفیسر ڈاکٹر قادر بلوچ نے کہا ہے کہ بدقسمتی سے کرپشن ہمارے معاشرے میں ایک ناسور کی طرح سراہیت کر چکی ہے ، جب تک ہر فرد پہلے اپنے آپ کا احتساب نہیں کرے گا معاشرے سے بد عنوانی کا پھیلتا ہوا ناسور ختم نہیں ہوگا ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے عالمی انسداد بد عنوانی دن کے مناسبت سے محکمہ سکولز ایجوکیشن کے زیر اہتمام اور نیب بلوچستان کے تعاون سے صوبائی سطح پر سکول کے طلبہ اور طالبات کے درمیان تقریری ، پوسٹر سازی خطاطی اور اردو انگریزی مضمون نویسی کے مقا بلوں کی اختتامی تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب میں کہی ۔

تقریب میں ڈی جی نیب بلوچستان ظفر اقبال خان بھی موجود تھے ۔ تقریب میں ڈائر یکٹر سکولز ایجوکیشن عبدالواحد شاکر ایڈیشنل سیکرٹری ضیاء الرحمن کے علاؤہ صوبہ بھرسے ان مقابلوں میں حصہ لینے والے طلبہ اور طالبات اور ان کے اساتذہ کرام کی ایک بڑی تعداد موجود تھی ۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر تعلیم پروفیسر ڈاکٹر قادر بلوچ نے کہا کہ اس دن کی بڑی اہمیت ہے اس دن کے منانے کا مقصد یہ نہیں ہونا چاہیے کہ صرف تقاریر کریں اور عمل کچھ نہ کریں بلکہ یہ دن ایک سوچ کو یاد دلاتی ہے کہ احتساب ہمارے معاشرے کے لیے کتنا ضروری ہے ملک کے ہر فرد خاندان اور ہر ادارے کو اپنا احتساب خود کرنا چاہیے ۔

انہوں نے کہا کہ اگر ہم اپنے اختیارات کے استعمال کو مثبت انداز میں استعمال کریں تو معاشرے میں بدعنوانیوں کے خاتمے میں بہت ملے گی اگر یہی اختیارات کا ہم ناجائز طور پر استعمال کریں یا اپنے دئیے ہوئے اختیارات سے تجاوز کریں تو معاشرے میں بگاڑ کی صورتحال پیدا ہوگی جسکا نقصان پورے ملک میں رہنے والے ہر فرد کو ہو گا ۔ صوبائی وزیر تعلیم نے مزید کہا کہ پاکستان بننے کے بعد بہت سے ادارے کرپشن کو ختم کرنے کے لیے بنے لیکن یہ ناسور آج دن تک ہمارے ملک سے ختم نہیں ہوسکا لہذا اس ناسور کو اگر ختم کرنا ہے تو اس کے لیے سخت سے سخت اقدامات اٹھا نے ہوں گے ۔

انہوں نے کہا کہ کرپشن کے خاتمے کے لیے طلبہ اور طالبات اور اساتذہ پر بڑی ذمہ داری عائد ہوتی ہے کیونکہ ملک کی بھاگ دوڑ مستقبل میں آپ کے کندھوں پر آنے والی ہے تو اساتذہ کا یہ فرض بنتا ہے کہ وہ بچوں کو کرپشن کے خاتمے کے لیے ذہنی طور پر تیار کریں۔ انہوں نے کہا کہ جہاں بھی اچھا کام ہورہا ہو تو معاشرے کو ایک خوددار قوم کی طرح اسکی تائید کرنی چاہیے صوبائی وزیر تعلیم نے کہا کہ اگر ملک کو آگے بڑھنا ہے اور ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنا ہے تو کرپشن جیسے ناسور کو جڑ سے اکھاڑنا ہو گا اگر ہم اس معاملے میں سنجیدہ نا ہوے تو ملک اسی طرح باقی دنیا سے ہر شعبے میں پیچھے رہ جائے اور ترقی ہم سے کوسوں دور ہو جائے گی ۔

ڈی جی نیب ظفر اقبال خان نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خوشی اس بات کی ہے کہ ہماری آنے والی نسل اس ناسور کے بارے میں آگاہی رکھتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ذمہ داری آنے والی نسل پر ہے کہ وہ کرپشن کے ناسور کے خاتمے میں اپنا کلیدی کردار ادا کریں کیونکہ کرپشن ایک زہر کی طرح ہمارے معاشرے میں پھیل چکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک سے کرپشن کے ناسور سے آہنی ہاتھوں سے نمٹنا ہے کرپشن نے ہمارے ملک میں اپنی جڑیں مضبوط کردی ہیں

تاکہ ایک منظم منصوبہ کے تحت اس ناسور کے خلاف سخت اقدامات نہیں اٹھائیں گے اس وقت تک اسکا خاتمہ ناممکن ہے ۔ تقریب سے ڈائر یکٹر سکولز ایجوکیشن عبدالواحد شاکر اور ایڈیشنل سیکرٹری ضیاء الرحمن نے بھی خطاب کیا ۔ تقریب کے اختتام پر مختلف مقابلوں میں پوزیشن حاصل کرنے والے طلبہ اور طالبات میں تعریفی اسناد اور نقد انعامات بھی دئیے گئے ۔