بھارت کے بارے فیٹف کی جانب سے آن سائٹ جائزہ لینے سے متعلق سیمینار یکم نومبر کو منعقد ہوگا

قائداعظم یونیورسٹی

اسلام آباد۔30اکتوبر (اے پی پی):قائداعظم یونیورسٹی یکم نومبر کو ایک بین الاقوامی سیمینار کی میزبانی کرے گی جس میں فیٹف کی جانب سے بھارت کے بارے میں آئندہ ماہ کے دوران طے شدہ جائزے کے متوقع نتائج پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔ منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی معاونت پر نظر رکھنے والے عالمی ادارے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (فیٹف) کا ایک وفد نومبر میں بھارت کا دورہ کرے گا۔ فیٹف کی ٹیم ملک کی جانب سے انسداد منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی معاونت کے اقدامات کا جائزہ لے گی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق بھارت کا تخمینہ فیٹف کی جانب سے طے کردہ 11 فوری نتائج پر مبنی ہوگا جن میں انسداد منی لانڈرنگ اور انسداد دہشت گردی کی مالی معاونت کے فریم ورک شامل ہیں۔ قائداعظم یونیورسٹی کے سکول آف پالیٹکس اور آئی آر ڈیپارٹمنٹ کے زیراہتمام منعقد ہونے والے سیمینار میں تقریبا 300 پی ایچ ڈی سکالرز، معروف صحافی اور بین الاقوامی مندوبین شرکت کریں گے۔

کانفرنس کے اہم مقررین میں وفاقی وزیر داخلہ سرفراز بگٹی، وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ ڈاکٹر وقار مسعود خان، کینیڈا کی کونکورڈیا یونیورسٹی کے پروفیسر ڈاکٹر باقر ملک، نیشنل یوتھ الائنس کے صدر کامران سعید عثمانی، زی نیوز کے تجزیہ کار ڈاکٹر راجہ کاشف جنجوعہ اور یو این او ڈی سی کے نیشنل کنسلٹنٹ برائے سائبر کرائمز اینڈ فرانزک فتح الدین بی محمود شامل ہیں۔

اجلاس کے مقررین میں پاکستان میں المیادین بیروت کے بیورو چیف بکر یونس، العربیہ ٹی وی چینل قطر کے بررا خالد اور قائداعظم یونیورسٹی کے ڈاکٹر ظفر نواز جسپال بھی شامل ہیں۔