ریڈیو پاکستان کی بحالی اور مالی استحکام کے لیے کوششیں جاری ہیں، ڈی جی پی بی سی

کراچی۔ 13 فروری (اے پی پی):ڈائریکٹر جنرل پاکستان براڈ کاسٹنگ کارپوریشن (پی بی سی)سعید احمد شیخ نے کہا ہے کہ ریڈیو پاکستان کی بحالی اور مالی مسائل کے حل کے لیے کوششیں جاری ہیں۔وہ 13 فروری کو منائے جانے والے ورلڈ ریڈیو ڈے کے موقع پر نیو براڈ کاسٹنگ ہائوس پی بی سی کراچی کے دورے کے موقع پر گفتگو کر رہے تھے۔اس موقع پر سٹیشن ڈائریکٹر پی بی سی کراچی محبوب سلطان، ڈپٹی کنٹرولر نیوز ملاحت صولت، ڈی سی انجینئرنگ عمران اللہ خان، ڈی سی ایڈمن ارباب علی راہوجو اور دیگر افسران اور عملہ بھی موجود تھا۔ڈی جی پی بی سی نے کہا کہ کارپوریشن کو مالی طور پر قابل عمل بنانے کے لیے ایک نیا بزنس پلان تیار کیا گیا ہے جسے پی بی سی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے آئندہ اجلاس میں منظوری کے لیے پیش کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ بزنس پلان میں 15نکات شامل ہیں جن میں آڈیو بکس کی تخلیق، نیشنل بک فائونڈیشن کے ساتھ اشتراک، پی بی سی کے لیے بجلی کے نرخوں کو معقول بنانا، پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ موڈ میں ریونیو جنریشن کے لیے ملک بھر میں پی بی سی پراپرٹیز کا استعمال اور موٹر ویز پر سفر کرنے والی گاڑیوں پر آڈیو سگنل لیوی کا نفاذ شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ریڈیو پاکستان کی بحالی کے لیے پرعزم ہے اور اس سلسلے میں اقدامات کیے جا رہے کے عالمی دن کے موقع پر ریڈیو پاکستان اسلام آباد کا دورہ کیا اور انگریزی خبریں بھی پڑھیں۔انہوں نے کہا کہ ریڈیو پاکستان خیرپور کے ٹرانسمیٹر کو صرف ایک دن میں تبدیل کر دیا گیا ہے تاکہ ریڈیو سٹیشن کی رسائی کو بہتر بنایا جا سکے جبکہ حیدرآباد اور لاڑکانہ کے ٹرانسمیٹر کو بھی جلد تبدیل کر دیا جائے گا۔

اس کے علاوہ ہم پی بی سی کی ڈیجیٹل ٹرانسمیشن کو بہتر بنانے اور ملک بھر میں پروگراموں میں ڈی آر ایم پرمنتقلی کے لیے بھی کام کر رہے ہیں۔انہوں نے مزید بتایا کہ پی بی سی کا مخزن ”آہنگ” 1948 سے زیرِ اشاعت تھا لیکن اسے سرکاری اشتہار نہیں مل رہے تھے، اب آہنگ کو سرکاری میڈیا لسٹ میں شامل کرلیا گیا ہے اور اسے وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی طرف سے اشتہار مل سکیں گے۔انہوں نے کہا کہ ریڈیو کو معاشرے سے جوڑنے کے لئے ایک اور اہم اقدام کیا گیا ہے جس کے تحت نوجوانوں خصوصا ًکالجوں اور یونیورسٹیوں کے طلبا کے لیے ریڈیو پاکستان کے دروازے کھولنا اور مشاعروں کا انعقاد کیا جارہا ہے۔

سعید احمد شیخ نے پی بی سی کے ملازمین پر زور دیا کہ وہ مقاصد کے حصول کے لیے شاعروں، ادیبوں اور دانشوروں کے ساتھ روابط اور ہم آہنگی کو فروغ دیں۔ انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ ملازمین کو لگن کے ساتھ کام کرنا چاہیے اور مواد اور رویے میں جدت لانا چاہیے اور کارپوریشن کے وسائل کو منصفانہ طریقے سے استعمال کرنا چاہیے۔ڈائریکٹر جنرل نے دورے کے دوران ریڈیو پاکستان کراچی کے ماسٹر کنٹرول روم ( ایم سی آر) اور اسٹوڈیوز سمیت مختلف سیکشنز کا معائنہ کیا اور عالمی یوم ریڈیو کے موقع پر ریڈیو پاکستان کراچی سے سندھی زبان کے پروگرام ”سرہی سانجھ”کی براہ راست نشریات میں بھی حصہ لیا۔