سپریم کورٹ میں ایف آئی اے کی جانب سے صحافیوں کو نوٹسز کے اجراء سے متعلق کیس کی سماعت

Supreme Court
Supreme Court

اسلام آباد۔25مارچ (اے پی پی):سپریم کورٹ میں وفاقی تحقیقاتی ادارہ (ایف آئی اے) کی جانب سے صحافیوں کو نوٹسز کے اجراء سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی ۔ چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں عدالت عظمیٰ کے تین رکنی بنچ نے پیر کو یہاں کیس پر سماعت کی۔ سماعت کے موقع پر اٹارنی جنرل منصور عثمان اعوان، بیرسٹر صلاح الدین اور ایڈووکیٹ حیدر وحید عدالت میں پیش ہوئے اور اپنے دلائل اور عدالت کے سوالات کے جواب دیئے۔

دوران سماعت چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ پاکستان میں صحافیوں اور میڈیا کے ساتھ جو کچھ ہوا ہے اس پر تو کتابیں لکھی جا سکتی ہیں۔ عدالت نے استفسار کیا کہ عمران شفقت کے خلاف ایف آئی آر کس حکومت کے دور میں درج ہوئی؟۔ اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ عمران شفقت نے کوئی سنجیدہ جرم نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ میرے خیال میں اس کیس میں ایسا کچھ نہیں ہے۔ سماعت کے دوران ایف آئی اے نے صحافیوں عمران شفقت اور عامر میر کے خلاف مقدمات واپس لینے کی یقین دہانی کرا دی۔ بعد ازاں عدالت نے کیس کی مزید سماعت بدھ 27 مارچ 2024ء تک کیلئے ملتوی کر دی۔