سپریم کورٹ نے ملک میں 8 فروری کے عام انتخابات کو کالعدم قرار دینے سے متعلق درخواست خارج کر دی

Supreme Court
Supreme Court

اسلام آباد۔21فروری (اے پی پی):سپریم کورٹ نے ملک میں 8 فروری کے عام انتخابات کو کالعدم قرار دینے سے متعلق درخواست خارج کر دی۔عدالت نے درخواست گزار بریگیڈیر( ریٹائرڈ )علی خان کی عدالت میں عدم پیشی کی بنا پر ان پر 5 لاکھ روپے جرمانہ عائد کر دیا۔تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس قاضی فائز عیسی کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے عام انتخابات کو کالعدم قرار دینے کی درخواست پر بدھ کوسماعت کی۔

درخواست گزار علی خان گذشتہ سماعت پر عدالت میں پیش نہیں ہوئے۔عدالت نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے متعلقہ تھانے کے ایس ایچ او کو حکم دیا تھا کہ وہ درخواست گزار کو عدالت میں پیش کریں۔ اس کے علاوہ رجسٹرار آفس سے بھی کہا گیا تھا کہ وہ درخواست گزار سے رابطہ کرے۔درخواست گزار سابق بریگیڈیئر علی خان بدھ کو بھی عدالت میں پیش نہ ہوئے۔ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ علی خان کے گھر پولیس بھی گئی اور وزارت دفاع کے ذریعے نوٹس بھی بھیجا گیا تاہم وہ گھر پر نہیں تھے۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے بتایا کہ درخواست گزار سابق بریگیڈیئر ہیں جن کا 2012 میں کورٹ مارشل ہوا تھا۔ چیف جسٹس نے درخواست گزار کی ای میل عدالت میں پڑھ کر سنائی جس میں انہوں نے درخواست واپس لینے کی استدعا کی ہے۔علی خان نے لکھا ہے کہ بیرون ملک ہونے کے وجہ سے عدالت میں پیش نہیں ہوسکتا۔ سپریم کورٹ نے اس درخواست کو خارج قرار دیتے ہوئے درخواست گزار بریگیڈیر ( ریٹائرڈ ) علی خان کی عدالت میں عدم پیشی کی بنا پر 5 لاکھ روپے جرمانہ عائد کر دیا۔