غیر قانونی افراد کی واپسی کے لیے بلوچستان کے مختلف اضلاع سے پانچ گذرگاہیں فعال کردی ہیں ،جان اچکزئی

information minister, Balochistan
information minister, Balochistan

کوئٹہ۔ 31 اکتوبر (اے پی پی):نگران وزیر اطلاعات جان اچکزئی نے کہا ہے کہ اب تک 30 ہزار غیر ملکی تارکین وطن افغانستان اور ایران واپس جاچکے ہیں ،تارکین وطن کے واپس جانے والوں کے لیے بلوچستان کے مختلف اضلاع سے پانچ گذرگاہیں فعال کردی ہیں، کل بدھ سے غیر قانونی تارکین وطن کے خلاف فارن ایکٹ کے تحت مقدمات درج ہوسکیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے منگل کوکوئٹہ میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

نگراں وزیراطلاعات جان اچکزئی نے کہا کہ کوئٹہ میں سندھ اور پنجاب سے آنے والے تارکین وطن کو سہولیات دی جائیں گی،واپس جانے والے تارکین وطن کا ہولڈنگ سینٹروں میں تین روز قیام ہوگا۔انھوں نے کہا کہ تارکین وطن کی اطلاعات کے لئے مساجد میں اعلان کیے جارہے ہیں،غیر قانونی طور رہنے والوں کی جائیدادیں ضبط ہوگی اور غیر قانونی تارکین وطن کو سہولیات فراہم کرنے والوں کے خلاف بھی کارروائی ہوگی ، اب تک 30 ہزار افراد اب تک واپس جاچکے ہیں چونکہ آج منگل کو ڈیڈ لائن کا آخری دن ہے اس لیے روانگی کا وقت 4 بجے سے بڑھا دیا گیا ہے تاکہ غیر قانونی تارکین وطن باعزت طریقے سے نکل جائیں ۔

انھوں نے کہا کہ حکومت کے پاس افغانستان کے تمام مہاجرین اور ایران سے آنے والے بلوچ مہاجرین کا ڈیٹا موجود ہے حکومت اپنے فیصلے پر عمل درآمد ہر صورت کرےگی،چاغی میں تفتان باڈر پر ایران و عراق کے تارکین وطن کی باعزت واپسی کے لیے بھی کاونٹر زقائم کئے ہیں۔انھوں نے کہا کہ غیر ملکی تارکین وطن کو فارن ایکٹ کے تحت کل سے سرحد پار کیا جائیگا اور ان کے جائیدادوں کو سیل کر دیا جائے گا ،

سندھ اور پنجاب سے آنے والے تارکین وطن کے لیے کوئٹہ کے سینٹرز میں 3 دن رکھنے کے لیے انتظامات مکمل کرلیے گئے ہیں۔انھوں نے مزید کہا کہ جو لوگ غیر ملکی تارکین وطن کو پناہ اور ملازمتیں دے رہےہیں ریاست ان کے خلاف بھی کارروائی کریگی۔