موجودہ حکومت آئی ٹی اورٹیلی کام شعبہ کی توسیع اوراس شعبہ سےمتعلق برآمدات میں اضافہ کیلئے زیادہ سےزیادہ مراعات فراہم کررہی ہے،وزیرخزانہ کااجلاسوں سےخطاب

موجودہ حکومت آئی ٹی اور ٹیلی کام شعبہ کی توسیع اور اس شعبہ سے متعلق برآمدات میں اضافہ کیلئے زیادہ سے زیادہ مراعات فراہم کر رہی ہے، وزیرخزانہ کااجلاسوں سے خطاب

اسلام آباد۔23جون (اے پی پی):وفاقی وزیرخزانہ ومحصولات مفتاح اسماعیل نے کہاہے کہ موجودہ حکومت آئی ٹی اور ٹیلی کام شعبہ کی توسیع اور اس شعبہ سے متعلق برآمدات میں اضافہ کیلئے زیادہ سے زیادہ مراعات فراہم کر رہی ہے، حکومت معاشرے کے معاشی طورپرکمزوراورکم آمدنی والے طبقات کو مہنگائی کے اثرات سے بچانے کیلئے پرعزم ہے، متعلقہ وزارتیں وزیراعظم کی ہدایت اور وژن کے مطابق عملی، انتہائی موثر اور ہدف پرمبنی سبسڈیز کی تجاویز پیش کریں۔

انہوں نے یہ بات جمعرات کویہاں وزارت خزانہ میں انفارمیشن ٹیکنالوجی وٹیلی مواصلات شعبہ میں ٹیکس اوریوٹیلیٹی سٹورز کے زریعہ وزیراعظم ریلیف پیکج کی تقسیم سے متعلق اجلاسوں کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔انفارمیشن ٹیکنالوجی وٹیلی مواصلات شعبہ میں ٹیکس سے متعلق اجلاس میں وفاقی وزیر آئی ٹی اینڈ ٹیلی کمیونیکیشن سید امین الحق، سیکرٹری آئی ٹی اینڈ ٹیلی کام، چیئرمین پی ٹی اے، چیئرمین ایف بی آر اور دیگر سینئر افسران نے شرکت کی۔

وفاقی وزیر سید امین الحق نے وزیر خزانہ کو ملک کی معاشی ترقی میں آئی ٹی اور ٹیلی کام کے شعبہ جات کے کردار سے آگاہ کیا اور بتایا کہ اس وقت آئی ٹی اور ٹیلی کمیونیکیشن شعبہ کو ٹیکس سے متعلق مختلف مسائل کا سامنا ہے، انہوں نے پاکستان میں آئی ٹی اور ٹیلی کام شعبہ کی بقا اورترقی کے لیے کاروبار کرنے میں آسانی سے متعلق مختلف ٹیکسوں میں کمی اوراستثنیٰ کی درخواست کی۔

انہوں نے بتایا کہ آئی ٹی اور ٹیلی کمیونیکیشن کی ترقی سے نہ صرف برآمدات بلکہ جی ڈی پی کی مجموعی نمو میں بھی اضافہ ہوگا۔ وزیر خزانہ نے ملک کی مجموعی اقتصادی ترقی میں آئی ٹی اور ٹیلی ک کام شعبہ کے کردار کا اعتراف کیا۔انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ موجودہ حکومت آئی ٹی اور ٹیلی کام شعبہ کی توسیع اور اس شعبہ سے متعلق برآمدات میں اضافہ کیلئے زیادہ سے زیادہ مراعات فراہم کر رہی ہے۔

وزیر خزانہ نے کاروبار کرنے میں آسانی اور برآمدات میں سہولت کے لیے آئی ٹی اور ٹیلی کام شعبوں پر مختلف ٹیکسوں سے متعلق مسائل کو حل کرنے کے لیے ہر ممکن تعاون فراہم کرنے کا یقین دلایا۔ یوٹیلیٹی سٹورز کے ذریعہ وزیراعظم ریلیف پیکج کے حوالے سے اجلاس میں وفاقی وزیر برائے تخفیف غربت و سماجی تحفظ شازیہ مری، وفاقی وزیر برائے صنعت و پیداوار سید مرتضیٰ محمود، سیکرٹری خزانہ، سیکرٹری صنعت و پیداوار، سیکرٹری تخفیف غربت ، سیکرٹری بی آئی ایس پی، چیئرمین نادرا اور دیگر سینئر افسران نے شرکت کی۔ وزیر خزانہ نے معاشرے کے معاشی طورپرکمزوراورکم آمدنی والے طبقات کو مہنگائی کے اثرات سے بچانے کیلئے حکومت کے عزم کااعادہ کیا،

انہوں نے وزیراعظم کی ہدایت اور وژن کے مطابق عملی، انتہائی موثر اور ہدف پرمبنی سبسڈی کی تجاویز پیش کرنے کی دعوت بھی دی۔وفاقی وزیر برائے تخفیف غربت و سماجی تحفظ شازیہ مری اور وفاقی وزیر برائے صنعت و پیداوار سید مرتضیٰ محمود نے انفرادی بنیادوں کے بجائے گھرانوں کی بنیادوں پر وسائل کی بہتر تقسیم اور ایک چھتری کے نیچے متعدد سبسڈیز کو ہم آہنگ اورمضبوط ومربوط بنانے کیلئے تجاویز دیں۔

وزیر خزانہ نے بتایا کہ حکومت معاشی طورپرکمزورطبقات پر بڑھتی ہوئی قیمتوں کے بوجھ کو کم کرنا چاہتی ہے، انہوں نے متعلقہ وزارتوں کو ہدف پرمبنی سبسڈی کیلئے سفارشات اورتجاویز دینے کی ہدایت بھی کی۔