پاکستان اور چین کے مابین آزادانہ تجارتی معاہدہ کیلئے مذاکرات کے دوسرے مرحلے کا آٹھواں دور چین میں شروع

APP79-14 BEIJING: September 14 - Bilateral talks regarding CPFTA between Pakistan and China. APP

پاکستان اور چین کے مابین آزادانہ تجارتی معاہدہ کیلئے مذاکرات کے دوسرے مرحلے کا آٹھواں دور چین میں شروع،پاکستانی وفد کی قیادت سیکرٹری وزارت تجارت محمد یونس ڈھاگہ کر رہے ہیں،سی پیک اور آزادانہ تجارتی معاہدہ سے دونوں ممالک کو برابر فائدہ پہنچے گا،پاکستانی تاجروں کیلئے ویزہ میں آسانی ہونی چاہیے،یونس ڈھاگہ

اسلام آباد ۔ 14 ستمبر (اے پی پی) پاکستان اور چین کے مابین آزادانہ تجارتی معاہدہ کیلئے مذاکرات کے دوسرے مرحلے کا آٹھواں دور جمعرات کو چین میں شروع ہو گیا۔ چین سے موصولہ پیغام کے مطابق پاکستانی وفد کی قیادت سیکرٹری وزارت تجارت محمد یونس ڈھاگہ جبکہ چینی وفد کی قیادت چین کے نائب وزیر وانگ شاﺅون وزارت تجارت چین کر رہے ہیں۔ چین کا یہ وفد سات حکومتی محکموں اور وزارتوں کے نمائندوں پر مشتمل ہے۔ مذاکرات کے آغاز پر مہمانوں کا خیرمقدم کرتے ہوئے چینی نائب وزیر تجارت نے اس خواہش کا اظہار کیا کہ دونوں ممالک کے مابین اقتصادی اور تجارتی تعاون مزید بہتر اور مضبوط ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ چین اب پاکستان کا سب سے بڑا تجارتی شراکت دار ہے اور چائنہ پاکستان فریڈ ٹریڈ ایگریمنٹ ہونے اور اس پر عملدرآمد کے بعد پاکستان چین میں اپنی برآمدات کو وسعت دے گا کیونکہ ایک ارب تیس کروڑ کی آبادی والے ملک چین میں اشیاءکی طلب بھی بڑھ رہی ہے۔ اپنے افتتاحی کلمات میں سیکرٹری وزارت تجارت یونس ڈھاگہ نے کہا کہ اس وقت پاکستان اور چین کے مابین تجارت کا حجم سولہ ارب ڈالر ہے جس سے بڑھتے ہوئے اقتصادی تعاون کا پتہ چلتا ہے۔ سیکرٹری تجارت نے کہا کہ سی پیک اور آزادانہ تجارتی معاہدہ سے دونوں ممالک کو برابر فائدہ پہنچے گا۔ انہوں نے بڑھتے ہوئے تجارتی عدم توازن کے مسئلہ کو حل کرنے کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ چین کا دورہ کرنے والے پاکستانی کاروباری حضرات کیلئے ویزہ میں آسانی ہونی چاہیے۔ واضح رہے کہ پاکستان اور چین کے مابین آزادانہ تجارت کے پہلے مرحلے پر 2006ءمیں دستخط ہوئے تھے اور اس پر اسی سال کام شروع ہو گیا تھا۔ آٹھویں دور میں اب سرمایہ کاری کے مواقع اور سروسز کے شعبہ میں تجارت اور مختلف اشیاءکی تجارت بارے مذاکرات ہو رہے ہیں۔ اس موقع پر چین میں پاکستان کے سفیر مسعود خالد بھی موجود تھے۔