پاک چین دوطرفہ تجارت میں جاری مالی سال کے دوران اضافہ

پاک چین دوطرفہ تجارت میں جاری مالی سال کے دوران نمایاں اضافہ، مالی سال کے پہلے 10 ماہ میں چین کوپاکستان کی برآمدات میں سالانہ بنیادوں پر 40.46 فیصد، چین سے درآمدات میں 19.50 فیصد کی نمو

اسلام آباد۔6اپریل (اے پی پی):پاکستان اور چین کے درمیان دوطرفہ تجارت میں جاری مالی سال کے دوران عمومی اضافہ کارحجان دیکھنے میں آیا ہے، مالی سال کے پہلے 8 ماہ میں چین کوپاکستان کی اشیاء اورخدمات کی برآمدات میں سالانہ بنیادوں پر42.02 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیاہے۔

سٹیٹ بینک اورپاکستان بیوروبرائے شماریات کی جانب سے جاری کردہ اعدادوشمارکے مطابق جاری مالی سال کے پہلے 8 ماہ میں چین کو اشیاء اورخدمات کی برآمدات سے ملک کو1.895 ارب ڈالر کا زرمبادلہ حاصل ہواجوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 42 فیصدزیادہ ہے،

گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں چین کو اشیا اورخدمات کی برآمدات سے ملک کو1334.804 ملین ڈالرکازرمبادلہ حاصل ہواتھا۔فروری میں چین کو اشیاء اورخدمات کی برآمدات کاحجم 169.041 ملین ڈالرریکارڈکیاگیا جوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 20.60 فیصدزیادہ ہے،

گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں چین کو اشیاء اورخدمات کی برآمدات سے ملک کو140.16 ملین ڈالرکازرمبادلہ حاصل ہواتھا۔اعدادوشمارکے مطابق مالی سال کے پہلے 8 ماہ میں چین سے درآمدات پر8.105 ارب ڈالرکازرمبادلہ خرچ ہواجوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 14.72 فیصدزیادہ ہے،

گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں چین سے درآمدات پر7.065 ارب ڈالرکازرمبادلہ خرچ ہواتھا۔فروری میں چین سے درآمدات میں سالانہ بنیادوں پر90.63 فیصدکی نموہوئی، فروری 2024 میں چین سے درآمدات پر 1.146 ارب ڈالرکازرمبادلہ خرچ ہواجوگزشتہ مالی سال کی اسی مدت مین 601.18 ملین ڈالرتھا۔