پناہ گزینوں کی سکریننگ کے نئے قوانین کا نفاذ جون میں کیا جائے گا، جاپان

جاپان کی حکومت نے کہا ہے کہ پناہ گزینوں کی سکریننگ کے نئے قوانین کا نفاذ جون میں کیا جائے گا

ٹوکیو۔6اپریل (اے پی پی):جاپان کی حکومت نے کہا ہے کہ پناہ گزینوں کی سکریننگ کے نئے قوانین کا نفاذ جون میں کیا جائے گا، این ایچ کے کے مطابق جاپان نے کابینہ کے اجلاس میں نظرثانی شدہ امیگریشن قانون کو 10 جون سے نافذ کرنے کا فیصلہ کیا ہے جا میں دو بار سے زیادہ پناہ کی درخواست کرنے والوں کو ملک بدر کرنے کی گنجائش رکھی گئی ہے۔

موجودہ قانون کی ایک شق کے مطابق پناہ کے متلاشیوں کو ایسی صورت میں ملک بدر نہیں کیا جا سکتا جب تک پناہ گزین کی حیثیت کے لیے ان کی درخواستیں زیر غور ہوں۔ حکام کا کہنا ہے کہ کچھ لوگوں نے صرف ملک بدری سے بچنے کے لیے بار بار درخواستیں دائر کی ہیں۔نظرثانی شدہ قانون کے تحت، تیسری بار یا اس سے زیادہ مرتبہ سیاسی پناہ کی درخواست داخل کرنے والوں کو ایسی صورت میں ملک بدری کا سامنا کرنا پڑے گا،

جب وہ ٹھوس وجوہات پیش کرنے میں ناکام رہیں۔ملک بدری کا سامنا کرنے والے اب تک اصولی طور پر قید میں رکھے جاتے ہیں، تاہم نظر ثانی شدہ قانون انہیں حراستی مراکز سے باہر اور منظور شدہ کفیل کی نگرانی میں رہنے کی اجازت دیتا ہے