کاشتکار کپاس کی کاشت ترجیحاً15مئی تک مکمل کر لیں،ترجمان محکمہ زراعت پنجاب

Cotton
Cotton

سیالکوٹ ۔ 23 اپریل (اے پی پی):ترجمان محکمہ زراعت پنجاب نے کہا ہے کہ کپاس کے کاشتکار ترجیحاً15 مئی تک کاشت مکمل کر لیں اور کاشت سے قبل بیج کو محکمہ زراعت پنجاب کی سفارشات کے مطابق کپاس کی منظور شدہ بی ٹی اقسام استعمال کریں اور ترجیحاً ٹرپل جین اقسام کا استعمال کریں۔کاشتکار کم از کم 10 فیصد رقبہ پر محکمہ زراعت کی سفارش کردہ نان بی ٹی اقسام کی کاشت بھی کریں تاکہ حملہ آور سنڈیوں میں بی ٹی اقسام کے خلاف قوتِ مدافعت نہ پیدا ہو سکے۔

کپاس کی کاشت کیلئے سرٹیفائیڈ اور ٹیگ والا بیج استعمال کریں اور بیج کسی مستند ڈیلر سے خریدیں۔اگر بیج کا اُگاؤ 75 فیصد سے زیادہ ہو تو بُر اترا ہوا بیج6 کلو گرام اور بُر دار بیج8 کلو گرام فی ایکڑ استعمال کریں۔بوائی سے قبل بیج کومناسب کیڑے مار زہر ضرور لگائیں جس سے فصل ایک ماہ تک رس چوسنے والے کیڑوں خاص طور پر سفید مکھی کے حملہ سے بچی رہتی ہے۔

ترجمان محکمہ زراعت پنجاب نے مزید کہا کہ کپاس کی کاشت ترجیحاً پٹریوں پر کریں، جن علاقوں میں پانی کی کمی ہو وہاں پٹریاں بنانے کے بعد ہاتھ سے چوپا لگائیں جبکہ پانی والے علاقوں میں ڈرل کی مدد سے کاشت کریں اور قطاروں کا درمیانی فاصلہ اڑھائی فٹ رکھیں۔30 اپریل تک کاشتہ فصل کیلئے پودوں کی تعداد17500 فی ایکڑ رکھیں۔

تاہم کاشت اور قسم کے اعتبار سے پودوں کی فی ایکڑ تعداد اور پلانٹنگ جیومیٹری میں تبدیلی لائی جا سکتی ہے۔ کپاس کے کاشتکارآبپاشی، کھادوں کا استعمال اور کسی بھی قسم کی فنی راہنمائی کیلئے محکمہ زراعت کے مقامی عملہ سے رابطہ کریں اور محکمانہ سفارشات پر عمل کریں تاکہ کپاس کی فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ ممکن ہو سکے۔