کیلیفورنیا ۔ 18 اگست (اے پی پی) سائنسدانوں نے ڈھائی کروڑ سال پہلے پائی جانے والی ڈولفن کی ایک نسل دریافت کر لی۔برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق سائنس دانوں کا خیال ہے کہ ڈولفن کی اس نسل کاتعلق جنوبی ایشیا میں ناپید ہونے کے خطرے سے دوچار دریائی ڈولفن سے تھا، اس سے نئی نسل کے ارتقا کے شواہد بھی ملتے ہیں۔یہ تحقیق ایک جریدے پیرجے میں شائع ہوئی ہے۔تقریباً 22 سینٹی میٹر لمبے سر کے حصے کا فوسل ماہر ارضیات ڈونلڈ جے ملر نے جنوب مشرقی الاسکا میں دریافت کیا تھا۔اس کے بعد یہ کئی دہائیوں تک واشنگٹن ڈی سی کے سمتھسونین میوزیم آف نیچرل ہسٹری کا حصہ بنا رہا۔حالیہ تحقیق کرنے والے محققین الیگزینڈر بوئرسما اور نکولس پینسن کا کہنا ہے کہ یہ ڈولفن نیم قطبی پانیوں میں ڈھائی کروڑ سال پہلے تیرتی تھی۔