اسلام آباد ۔ 15 اگست (اے پی پی) یو کے پاکستانی کشمیری کونسلرز فورم (یو کے پی کے سی ایف) نے پاکستان میں تمام سیاسی جماعتوں پر زور دیا ہے کہ وہ عوامی مینڈیٹ کو کھلے دل سے تسلیم اور نامزد وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں نئی حکومت کے ساتھ تعاون کریں، آئین کے مطابق پانچ سالہ مدت پوری کرنے کیلئے تمام سیاسی جماعتوں کی جانب سے نئی حکومت کو سازگار سیاسی ماحول فراہم کرنے کی ضرورت ہے۔ یہ بات یو کے پی کے سی ایف کے کوآرڈینیٹر مشتاق لاشاری نے گزشتہ روز لندن میں ”اے پی پی“ کے نمائندے کو انٹرویو دیتے ہوئے کہی۔ لاشاری نے کہا کہ تمام سیاسی جماعتوں کو کھلے دل سے عوامی مینڈیٹ تسلیم کرتے ہوئے آئین کے مطابق پانچ سالہ مدت پوری کرنے کی غرض سے نامزد وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں نئی حکومت کے ساتھ تعاون کرنا چاہئے تاکہ وہ انتخابی مہم کے دوران عوام سے کئے گئے وعدوں کو عملی جامہ پہنا سکیں جس سے ملک میں نہ صرف جمہوریت بلکہ تمام شہریوں کو سماجی و معاشی انصاف کی فراہمی کو فروغ ملے گا۔ لاشاری نے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ انہوں نے حال ہی میں پاکستان کا دورہ کیا اور میں نے جس شخص سے بھی ملاقات کی انہوں نے اس خواہش کا اظہار کیا کہ نئی حکومت کو پانچ سالہ آئینی مدت پوری کرنے کیلئے سازگار سیاسی ماحول فراہم کرنا چاہئے تاکہ وہ اپنے انتخابی دعووں کو عملی جامہ پہنا سکے۔ کوآرڈینیٹر یو کے پی کے سی ایف لاشاری کا کہنا تھا کہ پاکستان میں نئی حکومت کو معیشت اور دہشت گردی سمیت متعدد چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔ انہوں نے اقتصادی چیلنجوں پر قابو پانے کیلئے پاکستانی تجارت اور غیر ملکی سرمایہ کاری میں اضافہ کیلئے اقدامات پر زور دیا۔ انہوں نے برطانیہ میں مقیم پاکستانی تارکین کی وطن کی جانب سے ملکی خوشحالی کیلئے اپنی طرف سے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ دریں اثناءسابق سیکرٹری خارجہ جلیل عباس جیلانی نے گزشتہ روز پاکستانی ہائی کمیشن لندن میں یوم پاکستان کی تقریب کے بعد ”اے پی پی“ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ 25 جولائی کے عام انتخابات کے نتیجہ میں ملک میں ایک ایماندار اور مو¿ثر حکومت کا قیام عمل میں لایا جا رہا ہے۔ انہوں نے توقع ظاہر کی کہ نئی حکومت قائداعظم محمد علی جناح کے وژن کی روشنی میں ملک و قوم کی خوشحالی کیلئے گڈ گورننس کو فروغ دے گی۔ معروف برٹش پاکستانی قانون دان کے خواجہ نے عام انتخابات میں پی ٹی آئی کی کامیابی کا گرمجوشی سے خیرمقدم کیا۔