اسلام آباد ۔ 7 جنوری (اے پی پی)وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی ترقی واصلاحات و شماریات مخدوم خسرو بختیار نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت ملک سے پولیو کے خاتمہ کے لئے بھرپور اقدامات کر رہی ہے، پولیو کا خاتمہ قومی ترجیحات میں شامل ہے اور اس پرمکمل قابو پانے کے لئے جامع منصوبہ بندی کی ضرورت ہے۔ سی ڈی ڈبلیو پی نے پولیو خاتمے کے حوالے سے نظر ثانی شدہ منصوبے کو ایکنک بھیجنے کی عبوری طور پر منظوری دیتے ہوئے ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ منصوبے پرعمل درآمد کے لئے مانیٹرنگ میکانزم تشکیل دیا جائے، صوبوں کی جانب سے پولیو خاتمے کے مد میں لئے گئے قرض کی ادائیگی کی یقین دہانی حاصل کی جائے، پولیو وائرس کے موجود ذخائر کو صوبوں کے ساتھ مل کر ختم کرنے کے لئے اقدامات کئے جائیں، متعلقہ وزارت سات روز کے اندر تمام سفارشات بمعہ آگاہی مہم و کیمیونیکیشن کے اخراجات کی تفصیلات بھی فراہم کرے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز سینٹرل ڈویلپمنٹ ورکنگ پارٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں پولیو کے خاتمے کے حوالے سے 986.3 ملین ڈالرز منصوبے پر بریفنگ دی گئی، اجلاس کو بتایاگیا کہ سال 2019ءکے آخر تک پو لیو پر قابو پانا ممکن ہوگا، پولیو کے مکمل خاتمے اور فالو اپ کیلئے مزید دو سال کا عرصہ درکار ہوگا۔