اسلام آباد ۔ 11 فروری (اے پی پی) چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی نے ترکمانستان، افغانستان، پاکستان اور انڈیا گیس پائپ لائن ( تاپی) کی جلد تکمیل پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایوان بالا اس سلسلے میں ہونے والی کوششوں کی ہر ممکن معاونت کرے گا۔ سینیٹ سیکرٹریٹ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق انہوں نے ان خیالات کا اظہار پارلیمنٹ ہاﺅس میں ترکمانستان کے سفیر جان نیوروچ ملامو اور چیئرمین تاپی پراجیکٹ مہمت مورت امانوو سے ملاقات کے دوران کیا۔ اس موقع پر سینیٹ میں قائد ایوان سینیٹر سید شبلی فراز، سینیٹر اورنگزیب اورکزئی اور انٹر سٹیٹ گیس سسٹم کے منیجنگ ڈائریکٹر مبین صولت بھی موجود تھے۔ چیئرمین سینیٹ کو بتایا گیا کہ ترکمانستان اور پاکستان کی حکومتوں نے اس اہم علاقائی منصوبے کی جلد تکمیل کےلئے قابل عمل موثر اقدامات کئے ہیں، اس منصوبے کےلئے زیادہ ترعلاقوں میں سروے مکمل کر لیا گیا ہے جبکہ منصوبے کے کچھ حصوں میں مزید سروے کرنے کی ضرورت ہے جسے جلد مکمل کر لیا جائے گا۔ اس منصوبے کی اہم دستاویزات بھی مکمل کر لی گئی ہیں جبکہ مختلف مالیاتی اداروں کی جانب سے بھی پیشکشوں کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔ چیئرمین سینیٹ نے بتایا کہ ایوان بالاءملک میں توانائی کی ضروریات کو پورا کرنے کےلئے کی جانے والی کوششوں میں نمایاں کردار ادا کر رہا ہے۔ سینیٹ میں قائد ایوان کی سربراہی میں ایوان بالا کی کمیٹی نے توانائی کے حوالے سے ایک جامع رپورٹ مرتب کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تاپی منصوبہ کے حوالے سے کی جانے والی کوششوں کو مربوط بنانے کےلئے ایوان بالا اپنا کردار ادا کرے گا۔ اس سلسلے میں بلوچستان حکومت اور دیگر اداروں سے رابطہ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ یہ منصوبہ نہ صرف خطے کی توانائی کی ضروریات کےلئے اہم ہے بلکہ پاکستان کی وسطیٰ ایشیاءکے ذریعے یورپ سے رابطے کےلئے بھی اہمیت کا حامل ہے اور اس منصوبے سے پیوستہ دیگر منصوبے بھی نہ صرف پاکستان بلکہ پورے خطے کی ترقی کےلئے نمایاں کردار ادا کر سکتے ہیں۔ صادق سنجرانی نے کہا کہ پاکستان اور ترکمانستان کے مابین دیرینہ دوستانہ تعلقات ہیں تاہم پارلیمانی روابطہ کو مزید مضبوط بنا کر معاشی تعاون کی راہ بھی ہموار کی جا سکتی ہے۔