ٹوکیو ۔ 20 مئی (اے پی پی) جاپان کے وزیراعظم شنزو ابے نے اپنے شہریوں کے اغوا کے معاملے کے تصفیے کے لئے شمالی کوریائی رہنما کم جونگ ا±ن سے ملنے کی اپنی خواہش کا دوبارہ اظہار کیا ہے۔چیف کابینہ سیکرٹری یوشی ہیدے س±وگا جو اغوا کے معاملے کے نگران وزیر بھی ہیں، نے وزیر اعظم شنزو ابے کے ہمراہ گزشتہ روز ٹوکیو میں اغوا شدگان کے اہل خانہ کے اجلاس میں شرکت کی۔ یہ اجلاس سال میں 2 مرتبہ ہوتا ہے۔ وزیراعظم ابے کا کہنا تھا کہ اس معاملے کو حل کرنا آسان نہیں ہے تاہم جاپان کو قدم اٹھانا پڑے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ بغیر کسی پیشگی شرط کے صدرکم سے ملنے کے لئے پر عزم ہیں تاکہ ان سے اس معاملے پر کھل کر بات کی جاسکے۔ اجلاس میں شریک ہونے سے قبل انہوں نے ساکیے یوکوتا سے ملاقات کی جن کی بیٹی میگومی کو 1977ء میں شمالی کوریائی کارندوں نے اغوا کر لیا تھا۔ جاپانی وزیر اعظم نے ان کو بتایا کہ اس معاملے کے تصفیے کے لئے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ جاپان کی مدد کرنے کی خواہش رکھتے ہیں۔ صدر ٹرمپ رواں ماہ دورہ جاپان میں اغوا شدگان کے اہل خانہ سے ملاقات کریں گے۔ واضح رہے کہ اس سے قبل صدر ٹرمپ نے 2017ء میں متاثرہ اہل خانہ سے ملاقات کی تھی۔