اسلام آباد ۔ 27 جون (اے پی پی) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان اور افغانستان نے ماضی کو بھلا کر مشترکہ ایجنڈے پر مل کر آگے بڑھنے کا فیصلہ کیا ہے، ہم نے طورخم بارڈر کو کھلا رکھنے کا بھی فیصلہ کیا ہے تاکہ چیزوں کی ترسیل ہو سکے، پاکستان قیام امن کیلئے اپنا کردار ادا کرتا رہے گا، پاکستان کا اصلاحاتی ایجنڈا اس وقت تک آگے نہیں بڑھ سکتا جب تک خطہ میں قیام امن نہ ہو۔ جمعرات کو پارلیمنٹ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہا کہ صدر اشرف غنی ایک بڑے وفد کے ساتھ پاکستان تشریف لائے ہیں جس میں اہم وزراءان کے ہمراہ ہیں۔ افغان صدر کی وزیر اعظم عمران خان سے علیحدگی میں بھی ملاقات ہوئی اور وفود کی سطح پر بھی بات ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ یہ انتہائی خوش آئند بات ہے کہ ہم نے اتفاق کیا ہے کہ ہم ماضی پر ایک دوسرے کو موردالزام نہیں ٹھہرائیں گے بلکہ آگے بڑھیں گے، اب جو مسئلہ درپیش ہے وہ امن و استحکام کا ہے، ہم نے واضح کیا کہ امن ہم دونوں کی ضرورت ہے، پاکستان قیام امن کیلئے اپنا کردار ادا کرتا رہے گا۔