اسلام آباد ۔ 27 جون (اے پی پی) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان افغان امن عمل میں سہولت کاری، انٹرا افغان ڈائیلاگ اور باہمی اعتماد سازی کیلئے تمام وسائل کو بروئے کار لائے گا۔ پاکستان افغانستان کے ساتھ تجارتی، اقتصادی، سرمایہ کاری، مواصلاتی، توانائی اور ثقافتی تعلقات کو مزید بڑھانے کیلئے تیار ہے، پاکستان افغانستان میں تعمیرنو اور سماجی اقتصادی ترقی کیلئے کوششیں جاری رکھے گا۔ جمعرات کو یہاں انسٹی ٹیوٹ آف سٹرٹیجک سٹڈیز میں افغان صدر اشرف غنی کے عوامی مذاکرے سے اظہار خیال سے قبل اپنے خیر مقدمی ریمارکس میں وزیر خارجہ نے کہا کہ امن و خوشحالی کی راہ میں کئی چیلنجوں کا سامنا ہو گا جس پر مشترکہ کوششوں سے قابو پایا جا سکتا ہے۔ صدر اشرف غنی کا دورہ دونوں ملکوں کی قیادت کے مابین اعلی سطح پر رابطے بڑھانے کی مشترکہ خواہش کی علامت ہے۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ وزیراعظم عرصہ دراز سے اس بات پر زور دے رہے ہیں کہ افغان تنازعہ کا صرف پرامن سیاسی حل ہی ممکن ہے اور یہ بات انتہائی حوصلہ افزاءہے کہ آج تمام کمیونٹی نے اس بیانیہ کو تسلیم کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نے کھلے دل، نیک نیتی اور مشترکہ ذمہ داری کے تحت افغان امن عمل میں مکمل سہولت کاری فراہم کی ہے اور اپنا یہ کردار جاری رکھے گا جبکہ اس عمل میں تمام سٹیک ہولڈرز کو کوششیں کرنے کی ضرورت ہے۔