سرینگر۔ 24 اگست (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر کے علاقے سرینگر میں سینکڑوں لوگوں نے کرفیواور دیگر پابندیوںکو خاطر میں نہ لاتے ہوئے غیر قانونی بھارتی قبضے اور مقبوضہ علاقے کی خصوصی حیثیت ختم کیے جانے کے خلاف زبردست مظاہرے کیے۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق سرینگر کے علاقے صورہ میں گزشتہ روز نماز جمعہ کے بعد خواتین اور بچوں سمیت ایک ہزار کے لگ بھگ لوگوں نے جمع ہو کر زبردست مظاہرہ کیا۔ بھارتی فوجیوں نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے پیلٹ چلائے اور آنسو گیس کے گولے داغے جس کے بعدمظاہرین اور فورسز اہلکاروں کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں۔ قابض بھارتی فوجیوں کی طرف سے طاقت کے وحشیانہ استعمال کے نتیجے میں متعدد افراد زخمی ہو گئے ۔ قابض انتظامیہ نے بھارت کے کشمیر مخالف اقدامات اور جموںوکشمیر پر اس کے غیر قانونی قبضے کے خلاف سرینگر کے علاقے سونہ وار میں قائم اقوام متحدہ کے مبصرین دفتر کی طرف کشمیریوں کے احتجاجی مارچ کو روکنے کیلئے جمعہ کے روز کرفیو اور پابندیاں مزید سخت کر دی تھیں۔