اسلام آباد ۔ 14 اگست (اے پی پی) وزیراعظم عمران خان نے 73ویں یوم آزادی کے پرمسرت موقع پر اندرون و بیرون ملک بسنے والے تمام پاکستانیوں کو دلی مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ آج کے دن ہم سب مل کر اس عزم کا اعادہ کریں کہ پاکستان کو ترقی یافتہ اور خوشحال مملکت بنانے کےلئے اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے، فلاحی اسلامی ریاست کے حصول میں ہمارے لئے قابل تقلید نمونہ ریاستِ مدینہ ہے، مقبوضہ جموں و کشمیر میں حالیہ بھارتی اقدامات سے ہمارے آباو اجداد کے دو قومی نظریہ کو مزید تقویت ملی ہے۔ یہ بات انہوں نے73ویں یوم آزادی 2019ءکے موقع پر قوم کے نام اپنے پیغام میں کہی۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ 14 اگست ہماری ملی تاریخ کا وہ سنہرا دن ہے جو ہمیں ان لازوال قربانیوں کی یاد دلاتا ہے جو ہمارے آباو اجداد نے اپنی مذہبی، ثقافتی اور سماجی اقدار کے تحفظ کےلئے پیش کیں، یہ دن ہمیں ان مقاصد کی بھی یاد دلاتا ہے جن کے حصول کےلئے ایک آزاد خود مختار مسلم ریاست کا قیام عمل میں آیا۔ انہوں نے کہا کہ یوم آزادی ہمیں پاکستان کو اقوام عالم میں باوقار ریاست بنانے کا جذبہ و امنگ دیتا ہے، ہمارے عظیم قائد محمد علی جناح کے پیش نظر ایک ایسے ترقی پسند پاکستان کا تصور تھا جہاں اسلام کے سنہری اصولوں کے مطابق زندگی بسر کی جا سکے جہاں قانون کی حکمرانی، جمہوری اصولوں کی بالادستی اور ریاست و عوام کے درمیان احساس کا مضبوط بندھن ہو، اسی فلاحی اسلامی ریاست کے حصول میں ہمارے لئے قابل تقلید نمونہ ریاستِ مدینہ ہے۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ جموں و کشمیر کے معصوم اور نہتے عوام پر بھارت کے سنگین مظالم نے بین الاقوامی قوانین کی دھجیاں بکھیر دی ہیں۔وزیراعظم نے کہاکہ اللہ تعالیٰ نے پاکستان کو بے پناہ نعمتوں اور وسائل سے نوازا ہے، آج ہمارے سامنے ایک روشن مستقبل ہے، قائداعظم کے اتحاد، ایمان اور تنظیم کے رہنما اصولوں کو مشعل راہ بنا کر ملک کو درپیش ہر چیلنج اور مشکلات پر قابو پایا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج کے دن ہم سب مل کر اس عزم کا اعادہ کریں کہ پاکستان کو ترقی یافتہ اور خوشحال مملکت بنانے کےلئے اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے۔ انہوں نے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کے کردار پر زور دیتے ہوئے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ ان کی اپنے مادر وطن کے عظیم تر مفاد میں مربوط کوششوں کے ذریعے ہم ان پر فخر کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ وہ یوم آزادی کے اس پرمسرت موقع پر میں وطن عزیز کے ان دلیر سپوتوں کو بھی خراج عقیدت پیش کرتے ہیں جنہوں نے بے شمار قربانیوں اور اپنے لہو کا نذرانہ دے کر ملک کی نظریاتی اور جغرافیائی سرحدوں کی حفاظت کی اور ملکی سالمیت و خود مختاری کا علم بلند رکھا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یوم آزادی انتہائی خوشی کا موقع ہے، مگر آج کے دن ہم مقبوضہ جموں و کشمیر میں اپنے کشمیری بھائیوں کی حالت زار پر افسردہ ہیں جو بھارتی ظلم و جبر اور ریاستی دہشت گردی کا شکار ہیں، مقبوضہ جموں و کشمیر کے معصوم اور نہتے عوام پر بھارت کے سنگین مظالم نے بین الاقوامی قوانین کی دھجیاں بکھیر دی ہیں، انسانیت کی تضحیک کی تمام حدوں کو پار کر لیا ہے اور خطہ کا امن خطرے میں ڈال دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنے کشمیری بھائیوں کو یقین دلاتے ہیں کہ ہم ان کے ساتھ کھڑے ہیں، پاکستان مقبوضہ جموں و کشمیر کے بہادر عوام کی حق خودارادیت کے حصول کی منصفانہ جدوجہد کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا، مقبوضہ جموں و کشمیر میں حالیہ بھارتی اقدامات سے ہمارے آباو اجداد کے دو قومی نظریہ کو مزید تقویت ملی ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ اللہ تعالیٰ وطن عزیز کو ریاستِ مدینہ کی طرز پر ڈھالنے، قائداعظم اور علامہ اقبال کے تصور کو حقیقت میں بدلنے اور اقوام عالم میں ملک و قوم کو اس کا صحیح مقام دلانے میں ہمارا حامی و ناصر ہو۔