اسلام آباد ۔ 15 ستمبر (اے پی پی) وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سی ڈی اے امور علی نواز اعوان نے کہا ہے کہ پبلک سیکٹر ڈویلپمنٹ پروگرام کے تحت اسلام آباد میں مختلف ترقیاتی کاموں، تعلیم، صحت اور پانی کے لئے تقریباً 11ارب روپے کے فنڈز منظور کئے گئے ہیں، ان منصوبوں پر جلدکام شروع کر دیا جائے گا، اسلام آباد میں پانی اور پارکوں کی صورتحال کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرائیں گے۔ وفاقی دارالحکومت میں قبرستان کی کمی کی وجہ سے شہری اور دیہی علاقوں کی عوام کو سہولت دینے کے لئے 5نئے قبرستان بنائیں گے۔ میئراسلام آباد شیخ انصر عزیز کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ میں آئینی پٹیشن دائر کرنے جا رہے ہیں، عدالت سے ہم استدعا کریں گے کہ وہ بطور میئر اپنے فرائض سرانجام نہیں دے سکتے تو انہیں عہدے سے ہٹا دیا جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اتوار کو پریس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ میں رکن قومی اسمبلی راجہ خرم نواز کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ معاون خصوصی نے کہا کہ حکومت نے پبلک سیکٹر ڈویلپمنٹ کے تحت اسلام آباد میں مختلف ترقیاتی کاموں، تعلیم، صحت اور پانی کی بہتری کے لئے تقریباً 11ارب روپے منظور کرائے ہیں جس پر بہت جلد کام شروع کر دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ترقیاتی پروگرام کے لئے 2.45655ارب روپے مختص کیے گئے ہیں، اس پروگرام کے تحت مری روڈ پر بہارہ کہو کے مقام پر چار لین کا فلائی اوور کا قیام عمل میں لایا جائے گا، اسی طرح ترنول پھاٹک پر انٹرپاس بھی بنایا جائے گا،اس منصوبے پر کام رواں سال شروع کر دیا جائے گا۔ جی سیون اور جی ایٹ کے درمیان انٹرپاس بھی اس ترقیاتی پروگرام کا حصہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسلام آباد کے دیہی علاقوں پر کوئی توجہ نہیں دی گئی، ہم دیہی علاقوں میں سڑکوں کی مرمت و بحالی کے ساتھ ساتھ دیہی علاقوں کے لئے سیوریج کا نظام بھی بہتر کریں گے۔ علی نواز اعوان نے کہا کہ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں اڑھائی لاکھ بچے پرائیویٹ سکولوں میں اور سوا لاکھ بچے سرکاری سکولوں میں پڑھتے ہیں، تیس فیصد سکولوں میں ایک ٹیچر ہے، اس لئے اسلام آباد میں تعلیمی معیار کو بہتر کرنے کے لئے 700اساتذہ بھرتی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ پبلک سیکٹر ڈویلپمنٹ پروگرام کے تحت تعلیم کے لئے بھی خاطر خواہ رقم مختص کی ہے جس کے مطابق تعلیم کے لئے 1.866386ارب روپے میں 7نئے سکولوں کا قیام عمل میں لایا جائے گا، پہلے سے موجود سکولوں کی اپ گریڈیشن کی جائے گی۔