ابوظہبی ۔ 11 ستمبر (اے پی پی) سعودی عرب کے نئے وزیر توانائی شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان نے کہا ہے کہ سعودی عرب یورینیئم کی پیداوار اور افزودگی کا پروگرام بنا رہا ہے۔ ایٹمی توانائی سے بجلی کی پیداوارکیلئے یورینیئم کی ضرورت ہوگی۔سعودی میڈیا کے مطابق شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان ابوظبی میں توانائی کانفرنس کے موقع پر گفتگو کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ یورینیئم کی افزودگی کے منصوبے پراحتیاط سے کام لے رہے ہیں۔ آغاز 2 ایٹمی پلانٹ سے کرنے کا پروگرام ہے۔واضح رہے کہ سعودی عرب نے اعلان کررکھا ہے کہ وہ پرامن مقاصد کے لئے ایٹمی ٹیکنالوجی سے فائدہ اٹھانا چاہتا ہے۔وزیر توانائی نے زور دے کر کہا کہ سعودی وژن 2030ء میں توانائی کے شعبے کو بڑی اہمیت دی گئی ہے۔اس کی بدولت مختلف شعبوں میں سعودی معشیت مستحکم ہوگی۔ سعودی عرب اوپیک کے رکن اور غیر رکن ممالک کی ساتھ مل جل کر تیل منڈی کے استحکام اور اس میں توازن برقرار رکھنے کی پالیسی پر گامزن تھا ، ہے اور رہے گا۔سعودی وزیر توانائی نے کہا کہ سعودی پالیسی کا بنیادی ڈھانچہ تبدیل نہیں ہوگا۔ اوپیک پلس مشترکہ عزم کے ساتھ ماضی کی طرح مستقبل میں بھی کام کرتا رہے گا۔