اسلام آباد ۔ 12 نومبر (اے پی پی) اسلامی بینکاری کے فروغ سے ملک کو درپیش چار بڑے مسائل کا خاتمہ کیا جاسکتا ہے جن میں غربت’ آمدن میں عدم مساوات’ علاقائی ترقی کے مسائل اور جہالت کا سدباب شامل ہیں۔ اسلامی بینکاری کے شعبہ کے ماہرین نے کہا ہے کہ اسلامی بینکنگ کے نظام کی ترقی اور فروغ سے قومی معیشت کی ترقی میں مدد مل سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاشرہ کے بعض طبقات روایتی بینکاری کو اسلامی اقدار کے منافی سمجھتے ہیں اس لئے وہ بینکنگ کی سہولیات کے استفادہ سے محروم رہتے ہیں تاہم اسلامی بینکاری سے انہیں بینکنگ کی جدید سہولیات تک رسائی فراہم کی جاسکتی ہے۔ ماہرین نے کہا کہ بینکنگ کی صنعت کے لئے نان پرفارمنگ لونز ایک بڑا مسئلہ ہیں تاہم اسلامی بینکنگ شریعہ کمپلائنٹ کے ذریعے ایسے قرضوں کا بہتر حل پیش کرسکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ اسلامی بینکاری کے نظام کی ترقی سے پاکستان کو درپیش چار بڑے مسائل پر قابو پایا جاسکتا ہے اور اس سے غربت میں کمی ‘ لوگوں کی آمدنی میں مساوات ‘ ملک کے مختلف علاقوں کی ترقی اور شرح تعلیم کے فروغ میں مدد حاصل کی جاسکتی ہے۔