سی پیک کے دوسرے مرحلہ کے تحت 313 ٹیرف لائنز کے سبب تجارت کے حجم میں 18 ماہ میں 500 ملین ڈالر کا اضافہ ہوگا، سرمایہ کاری بورڈ حکام

اسلام آباد ۔ 12دسمبر(اے پی پی) چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک) کے دوسرے مرحلہ کے تحت 313 ٹیرف لائنز کے سبب تجارت کے حجم میں 18 ماہ میں 500 ملین ڈالر کا اضافہ ہوگا جبکہ چین نے پاکستان کے ٹیکسٹائل،لیدر،انجینئرنگ کیمیکلز،فرنیچر،آٹوپارٹس، پلاسٹک، ربڑ، گلاس،سرامکس، سرجیکل اوزار، سمندری غذا اور گوشت کے شعبے کی مصنوعات کو زیرو ڈیوٹی میں شامل کیا ہے۔ سرمایہ کاری بورڈ کے حکام کے مطابق چین پاکستان آزاد تجارتی معاہدہII کی فہرست میں شامل مصنوعات کو دی گئی ٹیکس رعایت یکم جنوری 2020ء سے نافذ ہوگی۔ دونوں ملکوں کے درمیان طے پانے والے اس معاہدے کے تحت چین فوری طور پر 313 مصنوعات پر ٹیرف لائنز کا خاتمہ کرے گا جس کی لاگت پاکستان کی بین الاقوامی برآمدات کا 8.7 ارب ڈالر اور چین کے مجموعی درآمدات کا 64 ارب ڈالر بنتا ہے۔ اس فیصلے کے بعد پاکستان کو 75 فیصد تک تجارتی توزان حاصل ہوگا۔