اسلام آباد ۔ 14 فروری (اے پی پی) ترک خاتون اول امینہ اردوان نے کہا ہے کہ معاشی طور پر خود انحصار خواتین اپنے خاندان کی پائیدار معاونت کے ساتھ ساتھ قومی معیشت کو پروان چڑھانے میں مثبت کر دار ادا کر سکتی ہیں۔ ان خیالات کا اظہا انہوں نے جمعہ کو تھیلیسیمیا کا شکار خواتین میں سلائی مشینوں کی تقسیم کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ترک خاتون اول نے کہا کہ بیماری نے پورے کے پورے خاندان بری طرح متاثر کئے ہیں اور ایسے خاندانوں کی مسلسل اخلاقی مدد کی ضرورت ہے۔ امینہ اردوان نے کہا کہ پاکستان اور ترکی کے مابین دوستانہ تعلقات دونوں ملکوں کے عوام کے مفاد میں مزید مستحکم ہوں گے۔ انہوں نے پاکستان میںتھیلیسمیاکے مریضوں کی تعداد میں روز بروز اضافے پر تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ ترکی سماجی بہبود کے میدان میں پاکستان کو مدد فراہم کرے گا۔ انہوں نے اس نا گہانی مرض میں کمی لانے کے لئے شادی سے قبلتھیلیسمیاکے میڈیکل ٹیسٹ کرانے کی بھی ضرورت پر زور دیا۔ امینہ اردوان نے کہا کہتھیلیسمیاکے مرض میں مبتلا خواتین کو سلائی مشینوں کے تحائف سے ان خواتین کو معاشی طور پر خود انحصاری کی جانب بڑھنے میں مدد ملے گی۔ اس موقع پر خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا حکومت خواتین کو معاشرے کا مفید شہری بنانے پر پختہ یقین رکھتی ہے کیونکہ ان کی شمولیت کے بغیر قومی ترقی کا نظریہ بے معنی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان بیت المال صدر اور وزیر اعظم کے وژن کی روشنی میں خواتین کے با اختیاری ہونے پر مکمل یقین رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ خواتین کے حقوق کا تحفظ حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ انہوں نے تھیلیسمیا سے متاثرہ خواتین میں سلائی مشینوں کی تقسیم کا خیر مقدم کرتے ہوئے ترک خاتون اول کا شکریہ ادا کیا۔ بعد ازاں بیگم ثمینہ علوی نے امینہ اردوان کو روایتی شال پیش کی۔ وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے سماجی بہبود و تخفیف غربت ڈاکٹر ثانیہ نشتر اور پاکستان بیت المال کے مینیجنگ ڈائریکٹر عون عباس بپی بھی اس موقع پر موجود تھے۔