اسلام آباد ۔ 14 فروری (اے پی پی) ترکی کے وزیر ٹرانسپورٹ و انفراسٹرکچر کاہت ترہان کی زیر قیادت وفد نے جمعہ کو یہاں وفاقی وزیر بحری امور علی زیدی سے یہاں ملاقات کی اور چین پاکستان اقتصادی راہداری میں دلچسپی کا اظہار کرتے ہوئے دونوں ممالک کے درمیان بحری امور کے شعبے میں تعاون کے فروغ پر تبادلہ خیال کیا۔ اس موقع پر ترکی کے وزیر ٹرانسپورٹ نے جہاز رانی کے شعبے میں دو طرفہ تعاون کو فروغ دینے کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ شپ یارڈ کے کام میں ٹیکنالوجی اور تجربے کے ذریعے ترکی پاکستان کی مدد کر سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی افرادی قوت کو ترکی کی کمپنیوں میں ترجیحی مواقع فراہم کئے جائیں گے اور اس سلسلے میں ضروری پروٹوکول اور مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخطوں کے بعد تیزی سے ان پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے گا۔ ملاقات کے دوران ترکی کے وفد نے سی پیک میں دلچسپی کا اظہار کیا اور پاکستان میں بنیادی ڈھانچے کی ترقی کیلئے تعاون کی خواہش ظاہر کی۔ ترکی کے وزیر نے کہا کہ پاکستان اور ترکی کے تعلقات کی ایک پرانی تاریخ ہے اور دونوں ممالک نے ہر دکھ سکھ میں ایک دوسرے کا ساتھ دیاہے۔ وفد کی سطح پر ہونے والے مذاکرات میں سیکرٹری وزارت بحری امور رضوان احمد، ایڈیشنل سیکرٹری نادر ممتاز وڑائچ اور جوائنٹ سیکرٹری کامران فاروق انصاری بھی موجود تھے۔ وفاقی وزیر بحری امور نے ترکی کے وفد کو پاکستان کی نئی شپنگ پالیسی کے بارے میں آگاہ کیا جس نے پاکستان میں رجسٹرڈ بحری جہازوں کیلئے ٹیکس کے استثنیٰ اور لنگر اندازی کے حوالے سے ترجیحی حقوق جیسے اقدامات شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ساحلی علاقوں اور سیاحت کی صنعت کی ترقی کیلئے وسیع گنجائش موجود ہے اور اگلے کچھ برسوں میں بعض منصوبوں کا آغاز ہونے والا ہے جس سے ملک کے بحری امور کے شعبے میں ایک انقلاب واقع ہو گا۔ ترکی کے وزیر کو رواں سال کراچی میں ہونے والی میری ٹائم ایکسپو میں شرکت کی بھی دعوت دی گئی جو انہوں نے قبول کر لی اور اس نمائش میں ترکی کی کمپنیوں کو مدعو کرنے پر اتفاق کیا۔ مذاکرات کے دوران پاکستانی وفد نے پاکستان کے ملاحوں کو درپیش مسائل سے بھی ترکی کے وفد کو آگاہ کیا اور درخواست کی کہ ویزے کی پابندیوں سمیت مختلف معاملات میں انہیں آسانی فراہم کی جائے۔ انہوں نے ترکی کے بحری جہازوں میں پاکستانی ملاحوں کو ملازمت فراہم کرنے کے معاملے پربھی تبادلہ خیال کیا جن کی پیشہ وارانہ صلاحیتوں کو دنیا بھر میں سراہا جاتا ہے۔