مکی آرتھر پاکستان کرکٹ کی تاریخ کاسب سے با اختیار کوچ رہاہے،محمد حفیظ

اسلام آباد ۔ 31 مارچ (اے پی پی) قومی کرکٹ ٹیم کے آل راو¿نڈر محمد حفیظ نے کہا ہے کہ ان کے خیال میں مکی آرتھر پاکستان کرکٹ کی تاریخ کاسب سے با اختیار کوچ رہاہے۔منگل کونجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا انہوں نے کہا کہ مکی آرتھر جب قومی کرکٹ ٹیم کے کوچ تھے تو ان کے پاس بہت سارے اختیارات تھے جوکہ دیگر کوچز میں ان کا فقدان ہے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سابق کوچ مرحوم باب وولمر اور محسن حسن خان ان کی پسندیدہ کرکٹر تھے جو ماضی میں قومی ٹیم سے وابستہ رہے ہیں۔ باب وولمر ایک بہت اچھے کوچ تھے وہ کھلاڑیوں کو بنیادی تکنیک سیمت کنڈیشن کے ماہر تھے اور انہوں نے ٹیم میں بھی اچھا کمبینیشن بنایا تھا۔ دوسری طرف محسن کو کرکٹ کا اچھا شعور تھا ان سے واقعی میں متاثر ہوا، وہ ہمارے سابق کرکٹرز ہیں ملک میں ان کی صلاحیتوں کو بروئے کار لانا چاہئے۔اپنی ریٹائرمنٹ کے بارے میں محمد حفیظ نے کہا کہ وہ رواں سال آسٹریلیا میں ورلڈ ٹی 20 ورلڈ کرکٹ کپ کے بعد خود کو ریٹائر ہوتے ہوئے دیکھ رہے ہیں، میں ٹی 20 ورلڈ کپ کے بعد باعزت طریقے سے ریٹائر ہونا چاہتا ہوں لیکن جب تک میں فٹ اور کارکردگی دکھاتا رہوں دنیا بھر میں لیگ کھیلنا جاری رکوں گا۔ محمد حفیظ نے کہا کہ بھارتی کپتان ویرات کوہلی اور پاکستان کے نامور بلے باز بابر اعظم کا موازنہ نہیں کیا جانا چاہئے۔ کوہلی ایک شاندار کرکٹر ہیں اور بابر بھی اچھا کھیل رہا ہے۔ انہوں نے کہا دونوں کی اپنی اپنی کلاس ہے۔انہوں نے کہا کہ ایسے کرکٹرز کے بارے میں معیار طے کرنے کی ضرورت ہے جو ملک میں نام روشن کرتے ہیں۔ حفیظ نے پاکستان کرکٹ بورڈ، حکومت اور مسلح افواج کی بھی تعریف کی جن کی بدولت ملک میں مکمل ایڈیشن پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 2020 کا انعقاد ممکن ہوا کیا۔ انہوں نے کہا کہ لوگ پچھلے 10 سے 12 سالوں سے اس قسم کی خوشی سے محروم تھے۔