کراچی۔ 26 مارچ (اے پی پی)پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں جمعرات کو ملا جلا رجحان رہا، عالمی اسٹاک مارکیٹوں میں بہتری آنے کے باعث مقامی اسٹاک مارکیٹ میں بھی منافع بخش کمپنیوں کے شیئرز کی خریداری کی گئی لیکن ساتھ ہی کرونا وائرس کی روک تھام کے لئے اقدامات اور معیشت پر مرتب ہونے والے منفی اثرات کے باعث سرمایہ کار محتاط بھی نظر آئے جس کے سبب اتار چڑھاو دیکھنے میں آیا اورٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای100انڈیکس 28ہزار کی نفسیاتی حد کو بحال کرتے ہوئے 28191پوائنٹس کی بلند اور27046پوائنٹس کی نچلی سطح پر ریکارڈ کیا گیا تاہم کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس 38.40پوائنٹس کے اضافے سے27267.20پوائنٹس پر بند ہوا ۔کے ایس ای30انڈیکس بھی 45.36پوائنٹس کے اضافے سے11879.19پوائنٹس جب کہ کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 87.98پوائنٹس کی کمی سے 20043.89پوائنٹس پر بند ہوا ۔نمایاں کاروباری سرگرمیوں کے لحاظ سے کے الیکٹرک، یونٹی فوڈز،ٹی آر جی پاکستان،ہیسکول پٹرول،پایونیئر سیمنٹ، بینک آف پنجاب ، میپل لیف، آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ ،لوٹی کیمل اور حب پاور کمپنی کے شیئرز سرفہرست رہے ۔گزشتہ روز مجموعی طور پر 347کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا جن میں سے 152کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ہوا لیکن اس کے مقابلے میں182کمپنیوں کے حصص کی قیمتیں گرگئیں اور 13کمپنیوں کے حصص کی قیمتیں مستحکم رہیں بیشتر کمپنیوں کے شیئرز کی قیمتوں میں کمی آنے کے باعث سرمایہ کاروں کو 23ارب51کروڑ13لاکھ روپے کا نقصان اٹھانا پڑا جس سے مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ کم ہو کر53کھرب 56ارب 66کروڑ1لاکھ روپے رہ گیا جب کہ حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم 18کروڑ67لاکھ45ہزار شیئرز رہا جو بدھ کے مقابلے میں4کروڑ16لاکھ38ہزار شیئرز زائد ہے ۔گزشتہ روزقیمتوں میں اتارچڑھاؤ کے حساب سے باٹا پاک کے حصص کی قیمت 66.41روپے کے اضافے سے1474.99روپے اوروائتھ پاک کے حصص کی قیمت33.80روپے اضافے سے 33.80روپے ہوگئی جب کہ نمایاں کمی کے لحاظ سے رفحان میظ کے حصص قیمت150روپے کمی سے6350روپے اورپاک ٹوبیکو کے حصص کی قیمت51.94روپے کمی سے1649.06روپے ہوگئی ۔