اقوام متحدہ کا لیبیا میں انسانی سمگلروں کی فائرنگ سے 30تارکین وطن کی ہلاکت پر تحقیقات کا مطالبہ

طرابلس ۔ 30 مئی (اے پی پی) اقوام متحدہ نے طرابلس سے 180کلو میٹر دور مزیدا قصبے میں واقع انسانی اسمگلروں کے اڈے پر فائرنگ سے 30تارکین وطن کے قتل کی تحقیقات کا مطالبہ کر دیا ہے۔چینی خبر رساں ادارے کے مطابق اقوام متحدہ کے ہیومینیٹرین کوآرڈینیٹر برائے لیبیا یعقوب ایل ہیلو نے ایک بیان میں کہاکہ میزدہ میں اسمگلنگ کے اڈے پر گزشتہ روز کی گئی فائرنگ کے بارے میں خوفناک خبروں سے میں حیران ہوںاوریہ واقعہ جس علاقے میں ہوا ہے وہاں کے حکام کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ انسانی سمگلروں کو اپنی غیر انسانی اور ہتک آمیز حرکتوں کو جاری رکھنے کی اجازت نہ دی جائے۔انہوں نے مزید کہا کہ بے بس افراد کے خلاف جرائم کی فوری تحقیقات کرتے ہوئے ذمہ داروں کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جانا چاہئے اورلیبیا میں اسمگلروں کو جو استثنیٰ حاصل ہے اس کو فوری طور پر روکنا چاہئے۔واضع رہے کہ اقوام متحدہ کا اندازہ ہے کہ لیبیا میں 654,000 سے زیادہ تارکین وطن اور پناہ گزین رہ رہے ہیں جن میں سے بہت سے افراد کو من مانی نظربندیاں ، صنف پر مبنی تشدد ، جبری مشقت ، بھتہ خوری اور استحصال کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔