حکومت کی جانب سے تعمیراتی شعبہ کیلئے ٹیکس ریلیف پیکج سے 40 معاون صنعتوں کو فائدہ پہنچے گا، ترجمان ایف بی آر

اسلام آباد ۔ 22 مئی (اے پی پی) فیڈرل بورڈآف ریونیو(ایف بی آر) نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی وباءسے پیداہونے والی مشکلات سے نمٹنے کیلئے حکومت کی جانب سے تعمیراتی شعبہ کیلئے ٹیکس ریلیف پیکج سے 40 سے زائد معاون صنعتوں کو فائدہ پہنچے گا۔ ایف بی آر کے ترجمان نے جمعہ کوبتایا کہ پیکج سے صنعتوں کو فائدہ پہنچنے کے علاوہ ملک میں روزگارکے مواقع میں بھی نمایاں اضافہ ہوگا۔انہوں نے کہاکہ پیکج کے تحت نیاپاکستان ہاﺅسنگ سکیم میں سرمایہ کاری پرٹیکس میں 90 فیصد چھوٹ کا اعلان کیاگیا ہے، اسی طرح تعمیراتی شعبہ میں سرمایہ کاری پر ذرائع آمدن کو پوچھ گچھ سے مستثنیٰ قراردیاگیاہے۔ پیکج کے تحت فکسڈ ٹیکس کاآغازکردیا گیا جبکہ سہ ماہی اقساط میں ٹیکس ادائیگی کی سہولت دی گئی ہے۔ترجمان نے بتایا کہ تعمیراتی شعبہ کیلئے ٹیکس ریلیف پیکج میں ٹیکس رجسٹریشن کیلئے آسان اورسادہ طریقہ کاروضع کرلیاگیاہے، بلڈرز اورلینڈڈولپرزکوانکم ٹیکس اورکیپٹل گین ٹیکس میں چھوٹ دی گئی ہے۔ذاتی رہائش کیلئے مکان یا اپارٹمنٹ (500 مربع گزتک) کی خریداری پرکیپٹل گین ٹیکس کومعاف کردیاگیا ہے، اسی طرح سریہ اورسیمنٹ کے سواءدیگرتعمیراتی سامان اورخدمات پر ودہولڈنگ ٹیکس معاف کردیاگیا ہے۔ ترجمان نے کہاکہ تعمیراتی شعبہ کیلئے ٹیکس ریلیف پیکج سے نہ صرف تعمیراتی سرگرمیوں میں اضافہ ہوگا بلکہ اس سے روزگارکے مواقع بڑھنے کے ساتھ ساتھ 40 سے زائد معاون صنعتوں وشعبوں پربھی انتہائی مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔