وفاقی وزیر اسد عمر کی زیر صدارت کابینہ کمیٹی برائے توانائی کا اجلاس، کمیٹی نے وزرات توانائی کی ڈیزل اور پیٹرول کی درآمدات کو یورو V معیار کے مطابق ڈھالنے کی سفارشات کی منظوری دیدی

اسلام آباد ۔ 4 جون (اے پی پی) کابینہ کمیٹی برائے توانائی کا اجلاس وفاقی وزیر اسد عمر کی زیر صدارت جمعرات کے روز اسلام آباد میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں کابینہ کمیٹی نے وزرات توانائی کی ڈیزل اور پیٹرول کی درآمدات کو یورو V معیار کے مطابق ڈھالنے کی سفارشات کی منظوری دے دی گئی۔ ان مصنوعات میں سلفر کی کم مقدار کی وجہ سے فضائی آلودگی کم کرنے میں مدد ملے گی۔ یاد رہے کہ پاکستان کے بیشتر میدانی علاقے سردیوں میں سموگ کا شکار رہتے ہیں۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ پیٹرولیم ڈویژن ملک میں موجود تیل صاف کرنے والے کارخانوں کے ساتھ یورو V کو ملک میں نافذ کرنے کیلئے مل کر کام کرے گی۔ کابینہ کمیٹی نے فیصلہ کیا کہ یکم اگست 2020 کے بعد آئل کمپنیوں کو صرف یورو V پیٹرول درآمد کرنے کی اجازت ہو گی۔ کابینہ کمیٹی کے فیصلے کے مطابق جنوری 2021 سے صرف یورو V ڈیزل درآمد کرنے کی اجازت ہو گی اس سلسلے میں متعلقہ ادارے تفصیلی پلان تیار کریں گے۔ کابینہ کمیٹی نے قدرتی گیس استعمال کرنے والے کیپٹو بجلی کے کارخانوں کی استعداد کار کے حوالے سے کم از کم معیار کی بھی منظوری دی۔ کابینہ کمیٹی نے ہدایت کی فیصلے کے نفاذ کے وقت کورونا وبا کے توانائی شعبے پر اثرات کو مدنظر رکھتے ہوئے ڈیڈ لائنز مقرر کی جائیں۔ کابینہ کمیٹی نے کراچی کی مستقبل کی بجلی کی مانگ کی صورت حال کا بھی جائزہ لیا۔ اس سلسلے میں مستقبل میں کراچی کی ضروریات پوری کرنے کیلئے مختلف منصوبوں کا جائزہ لیا گیا۔ کابینہ کمیٹی نے کراچی کی مستقبل کی ضروریات کے حوالے سے توانائی ڈویژن کو کے الیکٹرک کے ساتھ مسلسل رابطہ رکھنے کی ہدایت کی۔ اجلاس میں کابینہ کمیٹی برائے توانائی کے ممبران وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز، وزیر ریلوے شیخ رشید، وزیر توانائی عمر ایوب، وزیر سمندری امور علی زیدی، مشیر خزانہ حفیظ شیخ، معاون خصوصی برائے پیٹرولیم ندیم بابر، معاون خصوصی برائے ترقی معدنی وسائل شہزاد قاسم کے علاوہ مختلف وزارتوں، نیپرا اور این ٹی ڈی سی کے اعلی حکام نے بھی شرکت کی۔