کے دوران کساد بازاری کی شکار عالمی معیشت کے لئے چین ایک سہارا ہے، آئی ایم ایف

بیجنگ ۔ 27 جون (اے پی پی) عالمی مالیاتی فنڈ کی جانب سے جاری ایک رپورٹ میں خیال ظاہر کیا گیا ہے کہ سال 2020 کے دوران عالمی معیشت کے 4.9 فیصد تک سکڑنے کا امکان ہے تاہم چین گرتی ہوئی عالمی معیشت کو سہارا دینے کےلئے اہم کردار ادا کرے گا۔ اس حوالے سے اپریل میں کی گئی پیش گوئی کے اعداد و شمار میں یہ تعداد 3 فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔ آئی ایم ایف کو توقع ہے کہ 2021 میں عالمی معیشت کی نمو دوبارہ 5.4 فیصد ہوجائے گی۔عالمی مالیاتی فنڈ نے موجودہ بحران کو1930 کی دہائی کی کساد بازاری کے بعد سب سے بدترین بحران قرار دیا ہے۔ 2020 کے دوران چین واحد معیشت ہے جس میں ترقی کا رجحان برقرار ہے۔واشنگٹن میں چائنا سینترول ٹی وی اسٹیشن کو ایک خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے ، بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کی چیف ماہر معاشیات گیتا گوپی ناتھ نے کہا کہ رواں سال کے پہلے نصف حصے کے تازہ ترین معاشی اعداد و شمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ اقتصادی بندش زیادہ دیرپا ہے ، جس کی وجہ سے سال کے پہلے نصف میں معاشی سرگرمیوں کا نہ ہونا ہے۔ چین 2020 میں ترقی کو برقرار رکھنے والی واحد بڑی معیشت ہے