مکہ مکرمہ، بارش کے دوران غلاف کعبہ کی تبدیلی

مکہ مکرمہ۔ 30جولائی (اے پی پی) مسجد الحرام و مسجد نبوی امور کی جنرل پریذیڈنسی کی نگرانی میں بارش کے دوران غلاف کعبہ تبدیل کردیا گیا۔ سعودی اخبار کے مطابق بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب مسجد الحرام و مسجد نبوی کے امور کی جنرل پریذیڈنسی کی نگرانی میں بار ش کے دوران پرانا غلاف اتار کر نیا غلاف کعبے پر چڑھادیا گیا ہے، یہ کام کئی اداروں کے تعاون سے انجام دیا گیا ہے۔اس سے قبل غلاف کعبہ کو قافلے کی شکل میں سپیشل ٹرک کے ذریعے کنگ عبدالعزیز کسو کمپلیکس سے منتقل کیا گیا۔ غلاف کعبہ کی حفاظت، پھٹنے سے بچانے اور کسی بھی قسم کے نقصان سے حفاظت کے لیے ٹرک کے اندرونی حصے میں خاص مادے کا لیپ کیا گیا تھا۔نئے غلاف کی تیاری میں 670 کلو گرام خالص ریشم،120 کلو گرام خالص سونے اور100 کلو گرام چاندی کے دھاگے استعمال کیے جاتے ہیں۔ سونے کے دھاگوں سے قرآنی آیات کی کڑھائی ہوتی ہے۔ ریشم خصوصی طور پر ا ٹلی سے درآمد کیا جاتا ہے جبکہ سونے اور چاندی کا پانی چڑھے دھاگے جرمنی سے منگوائے جاتے ہیں۔ غلاف کعبہ کی تیاری پر ایک اندازے کے مطابق 22 ملین ریال سے زائد لاگت آتی ہے۔ کنگ عبدالعزیز کسو کمپلیکس میں 200 سے زیادہ ماہرین غلاف کعبہ کی تیاری میں حصہ لیتے ہیں۔نیا غلاف کعبہ چار برابر پٹیوں اور ستار الباب پر مشتمل ہے۔ خانہ کعبہ کے چاروں اطراف کی پٹیوں کو الگ الگ تیار کیا جاتا ہے۔ تبدیلی کے عمل کے دوران پہلے ایک طرف کا حصہ اتار جاتا ہے۔ اس پر کی جگہ نیا غلاف چڑھا دیا جاتا ہے۔ اس کے بعد دوسرا، تیسرا اور چوتھا حصہ اتارا جاتا اسی ترتیب کے ساتھ نیا غلاف چڑھایا جاتا ہے۔ سب سے پہلے الحطیم کی طرف سے غلاف کعبہ کو کھولا جاتا اس کی جگہ نیا غلاف ڈالا جاتا ہے۔ غلاف کعبہ کو اوپر سے نیچے کی طرف پھیلایا جاتا ہے۔