کورونا وائرس کی عالمی وباء کے دوران دہشت گردی کی روک تھام کے لیے بین الاقوامی برادری کثیرالجہتی کوششیں کرے،کورونا وائرس کی طرح دہشت گردی کی بھی کوئی سرحد نہیں، اسے بھی اجتماعی طور پر ہی شکست دی جا سکتی ہے، سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ

اقوام متحدہ۔ 7 جولائی (اے پی پی) اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹریش نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی عالمی وباء کے دوران دہشت گردی کی روک تھام کے لیے تمام ممالک کو کثیرالجہتی سے کام لینا ہو گا۔ انہوں نے گزشتہ روز کورونا وائرس کی عالمی وباء کے دوران انسداد دہشت گردی کے لیے درپیش چیلنجز اور حکمت عملی پر اقوام متحدہ کے تحت منائے جانے والے” ورچوئل کائونٹر ٹیرارازم ویک”کے آغاز کے موقع پر اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹریش نے کہا کہ کورونا وائرس کی طرح دہشت گردی کی بھی کوئی سرحد نہیں ہے، یہ بھی تمام ممالک پر اثرانداز ہوتی ہے جسے اجتماعی طور پر ہی شکست دی جا سکتی ہے لہذا ہمیں دہشت گردی کی عملی روک تھام کے لیے کثیرالجہتی کی طاقت کو استعمال کرنا ہو گا۔ انہوں نے خبردار کیا کہ القاعدہ، آئی ایس آئی ایل، ان کی علاقائی ساتھی، نیو نازی سفید فام کے حامی افراد اور نفرت انگیزی پھیلانے والے دیگر گروپ اپنے مقاصد کے حصول کے لیے تقسیم، مقامی تنازعات ، حکومتی ناکامیوں اور شکایات کا استحصال کرنے کی کوشش کرتے ہیں لہذا تمام ممالک کو انسانی حقوق کے تحفظ اور فروغ کے تحت دہشت گردی کے خلاف جنگ میں تیزی لائیں اور اپنے ردعمل میں جدت اپنائیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں مزید اور بہتر کام کرنا ہو گا جیسا کہ ہمارے دیگر مشنز میں کام کیا جاتا ہے کوینکہ ہمارے کام کا اندازہ لوگوں کی زندگیوں میں لائی گئی تبدیلیوں سے لگایا جانا چاہیے۔ ورچوئل انسداد دہشت گردی ہفتہ میں مجموعی طور پر10 ویبنرز شامل ہیں اور مباحثے میں ایک ہزار سے زیادہ نمائندے کورونا بحران کی روشنی میں انسداد دہشت گردی کے کلیدی موضوعات پر اقوام متحدہ کی عالمی انسداد دہشت گردی کی حکمت عملی سے متعلق روشنی ڈالیں گے۔