سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور ڈپٹی سپیکر قاسم خان سوری کی عیدالاضحی کے پرمسرت موقع پر قوم کو مبارکباد

اسلام آباد ۔یکم اگست (اے پی پی) سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور ڈپٹی سپیکر قاسم خان سوری نے عیدالاضحی کے پرمسرت موقع پر قوم کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس وقت ملک کو کورونا وباءکا سامنا ہے اس لئے خود اور اپنے پیاروں کو اس وباءسے محفوظ رکھنے کے لئے عید سادگی سے منائیں اور محکمہ صحت کی جانب سے جاری کرداہ احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے عیدالاضحی کے پرمسرت موقع پر قوم کے نام اپنے جاری ہونے والے پیغام میں کیا جو (آج) ہفتہ کو ملک بھر میں مذہبی عقیدت و احترام سے منائی جائے گی۔ سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا کہ عیدالاضحی ایثار اور قربانی کا نام ہے اور یہ دن ہمیں حضرت ابراہیمؑ کی ا±س عظیم قربانی کے یاد دلاتا ہے جو ہر سال مسلمان حضرت ابراہیمؑ کی سنت پرعمل کرتے ہوئے مناتے ہیں جو انہوں نے اﷲ تعالیٰ کے حکم کی پیروی کرتے ہوئے اپنے سب سے پیارے بیٹے حضرت اسماعیلؑ کو اﷲ تعالیٰ کی راہ میں قربانی کے لئے پیش کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ اس خوشی کے موقع پر ہمیں اپنے نادار اور ضرورت مند بھائیوں کو نہیں بھولنا چاہئے اور دل کھول کر ا±ن کی مدد کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ حضرت کی ابراہیمؑ کی عظیم قربانی سے ہمیں یہ سبق ملتا ہے کہ اﷲ کی راہ میں جانی و مالی قربانی سے دریغ نہ کرنے والے ہمیشہ زندہ وجاوید رہتے ہیں۔ سپیکر نے کہا کہ عید کے اس موقع پر ہمیں مقبوضہ کشمیر کے اپنے ان بہن، بھائیوں کو یاد رکھنا ہے جو گزشتہ سال 5اگست سے بھارتی حکومت کے غیر آئینی اقدام کی وجہ سے محصور ہیں اور بنیادی ضروریات زندگی کے ساتھ ساتھ عبادات اور مذہبی فرائض کی ادائیگی سے محروم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بنیاد پرست مودی سرکار کے دور حکومت میں مقبوضہ کشمیر میں جمعہ اور عیدیں تک کے اجتماعات پر پابندی عائد ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستانی اور کشمیری عوام کے دل ایک ساتھ دھڑکتے ہیں اور دونوں کی خوشیاں اور دکھ سانجھے ہیں۔ انہوں نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ وہ دن دور نہیں جب حق خوارادیت کے حصول کے لئے دی گئیں لازوال قربانیاں رنگ لائیں گئیں جب کشمیری عوام اور ہم مل کر عیدکی خوشیاں منائیں گے۔ انہوں نے پاکستان کے اس اصولی مو¿قف کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان مسئلہ کشمیر کے منصفانہ حل تک کشمیری عوام کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا اور دنیا کے ہر فورم پر اس کے لئے آواز ا±ٹھاتا رہے گا۔ سپیکر نے کہا کہ کورونا وائرس کے عالمی وباءکے دوران پاکستان قوم نے انتہائی ذمہ داری کا ثبوت دیا ہے جس کی بدولت پاکستان اس وباءسے متاثر ہونے والوں کی تعداد انتہائی کم رہی ہے اور اس میں بتدریج کمی آ رہی ہے تاہم ابھی تک وباءکا مکمل طور پر خاتمہ نہیں ہو اور اگر عید کے دوران احتیاطی تدابیر پر عملدرآمدنہ کیا گیا تو اس کے تیزی سے پھلنے کا خطرہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وباءکے پھیلاءکو روکنے کا واحد طریقہ احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کرنا ہے۔ انہوں نے عید کے موقع پر عوام کو ، کورونا وائرس کے پھیلنے سے روکنے کے لئے حکومت کے ساتھ تعاون اور عالمی ادارہ صحت کی طرف سے جاری کردہ ایس او پیز پر عمل کرنا کا کہا۔ اس موقع پر ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری کا کہنا تھا کہ یہ عید ہمیں حضرت ابراہیمؑ کی ا±س عظیم قربانی کی یاد دلاتی ہے انہوں نے نے اللہ تعالیٰ کے حکم کی پیروہی کرتے ہوئے ادا کی جس قیامت تک مسلمان سنت ابراہیمی کے طور پر منائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو اس وقت کورونا وائرس سمیت دیگر چیلنجز کا سامنا ہے جس کے لئے ہمیں ملک و قوم کی خدمت کرنے کی ضرورت ہے۔ کورونا وائرس کے پیش نظر عیدالاضحی کو سادگی سے منانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ عید کے پرمسرت موقع پر ہمیں احتیاطی تدابیر پر عمل کرتے ہوئے اپنی اور اپنے پیاروں کی زندگیوں کو اس وباءسے محفوظ بنانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مقبوضہ کشمیر کی عوام پر ڈھائے جانے والے مظالم کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ سال سے بھارت کی غیر قانونی اقدام کی وجہ سے وادی میں جاری لاک ڈاو¿ں کے وجہ سے کشمیری عوام اپنے گھروں میں محصور ہیں اور انہیں مذہبی فرائض کی ادائیگی سے محروم رکھا جار ہا ہے جو انسانی بنیادی حقوق کی شدید خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عیدالاضحی کے موقع پر پاکستانی قوم کشمیری عوام کے ساتھ کھڑے ہیں۔ انہوں نے کشمیری عوام کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتے ہوے کہا کہ اقوام عالم کو کشمیری عوام کی جدو جہد آزادی کو فراموش نہیں کرنا چاہیے۔ اور کشمیری عوام کو بنیادی حق آزادی دلوانے میں اپنا کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے۔