حکومت صنعتی ترقی اور برآمدات میں اضافہ کے اہداف کے حصول کیلئے کوشاں ہے، خصوصی اقتصادی زونز خوشحال اور صنعتی طور پر مستحکم پاکستان کی بنیاد ثابت ہوں گے، وزیر مملکت و چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ عاطف بخاری

اسلام آباد ۔ 27 ستمبر (اے پی پی) براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری میں اضافہ کے لئے پانچ شعبے اولین ترجیحات میں شامل ہیں، موجودہ حکومت ملک میں سرمایہ کاری کے فروغ، پائیدار معاشی ترقی، روزگار کے نئے مواقع پیدا کرنے، صنعتی ترقی اور برآمدات میں اضافہ کے اہداف کے حصول کیلئے کوشاں ہے، خصوصی اقتصادی زونز ایک خوشحال اور صنعتی طور پر مستحکم پاکستان کی بنیاد ثابت ہوں گے۔ وزیر مملکت و چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ عاطف آر بخاری نے کہا ہے کہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے وژن کو حقیقت کا روپ دینے کیلئے موجودہ حکومت ملک میں سرمایہ کاری کے فروغ، پائیدار معاشی ترقی، روزگار کے نئے مواقع پیدا کرنے، صنعتی ترقی اور برآمدات میں اضافہ کے اہداف کے حصول کیلئے کوشاں ہے۔ براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری میں اضافہ کے لئے 5 شعبہ جات اولین ترجیحات میں شامل ہیں، خصوصی اقتصادی زونز ایک خوشحال اور صنعتی طور پر مستحکم پاکستان کی بنیاد ثابت ہوں گے۔ سی پیک کے دوسرے مرحلے میں نجی شعبہ کو قائدانہ کردار ادا کرنا چاہئے۔ وزیر مملکت و چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ عاطف بخاری نے اے پی پی سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کاروبار دوست پالیسیاں مرتب کرنا ہماری اولین ذمہ داری ہے جس سے براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کے گروغ میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ سرمایہ کاری بورڈ آئی ٹی انڈسٹری، ہائوسنگ و تعمیرات، فوڈ پراسیسنگ و زراعت، سیاحت اور لاجسٹکس جیسے پانچ اہم شعبہ جات پر خصوصی توجہ دے رہا ہے اور اس حوالہ سے پالیسی فریم ورک کی تشہیر کی جائے گی تاکہ ملکی و غیر ملکی سرمایہ کاروں کو مختلف سیکٹرز میں حاصل سہولیات اور مراعات سے آگاہی فراہم کی جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی و صوبائی وزارتوں کی مشاورت سے حال ہی میں الیکٹریک وہیکلز اور موبائل فونز کی تیاری کی پالیسیز مرتب کی گئی ہیں۔ ان شعبوں میں یورپی اور چینی سرمایہ کار گہری دلچسپی کا مظاہرہ کر رہے ہیں اور کئی بین الاقوامی کمپنیاں بھی ان شعبوں میں سرمایہ کاری کی خواہاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کاروبار میں آسانیاں پیدا کرنے کے لئے بورڈ آف انوسٹمنت دن رات کوشاں ہے جس سے ملکی و غیر ملکی سرمایہ میں اضافہ ہو گا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کووڈ۔19 کی وجہ سے متاثر ہونے والی سرگرمیوں کا دوبار آغاز کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری میں اضافہ کے لئے امن و امان کی بہتر صورتحال بنیادی اہمیت کی حامل ہوتی ہے اور گزشتہ دو سال میں امن و امان کی صورتحال میں کافی بہتری آئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کووڈ۔19 بحران بہت بڑا چیلنج تھا اور اگر یہ بحران نہ ہوتا تو پوری دنیا سے بڑے بڑے سرمایہ کار پاکستان کا رخ کر چکے ہوتے۔ وباء میں کمی کے بعد یورپ اور امریکا کی بڑی کمپنیاں پاکستان میں سرمایہ کاری میں بھرپور دلچسپی لے رہی ہیں۔ جس کے نتائج آئندہ چند مہینوں میں نظر آنا شروع ہوجائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک کے تحت اقتصادی زونز کے قیام سے ملک میں خوشحالی آئے گی اور صنعتی ترقی ہو گی۔ ان زونز میں ٹیکسٹائلز، انجینئرنگ، الیکٹرانکس، کیمیکلز و پینٹ، زراعت اور فوڈ پروسیسنگ، اسٹیل اور پیکیجینگ کے شعبوں میں صنعتیں قائم ہوں گی۔ پاکستان اور چین جغرافیائی شراکتداری ان اقتصادی زونز کی ترقی میں معاون ثابت ہو رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرمایہ کاری بورڈ خصوصی اقتصادی زونز میں تمام تر سہولیات اور مراعات کی فراہمی کو یقینی بنا رہا ہے۔