سسٹم کی وجہ سے ٹیلنٹ اوپر نہیں آتا، کرکٹ کے موجودہ نظام کو درست کرنے کی ضرورت ہے، وزیر اعظم عمران خان کا پاکستان ٹیلی وژن اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے درمیان نشریاتی حقوق کے حوالے سے معاہدے پر دستخطوں کی تقریب سے خطاب

اسلام آباد ۔ 16 ستمبر (اے پی پی) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان میں سسٹم کی وجہ سے ٹیلنٹ اوپر نہیں آتا، کرکٹ کے موجودہ نظام کو درست کرنے کی ضرورت ہے، مقابلہ کی فضا میں بہترین ٹیلنٹ سامنے آتا ہے، نوجوان کھلاڑیوں کو اوپر آنے کے لئے مواقع فراہم کئے جانے چاہئیں، ہم ٹیلنٹ کو آگے لانے والے سسٹم اور کرکٹ کے ڈھانچے کو ٹھیک کر لیں تو پاکستان ناقابل شکست ہو جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو یہاں پاکستان ٹیلی وژن اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے درمیان نشریاتی حقوق کے حوالے سے معاہدے پر دستخطوں کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ۔ تقریب میں وزیراعظم عمران خان، وفاقی وزیر بحری امور علی زیدی، وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے سمند رپار پاکستانیز زلفی بخاری، چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ احسان مانی اور چیئرمین پی ٹی وی ارشد خان بھی شریک تھے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ پی ٹی وی کھیلوں اور بالخصوص کرکٹ کی کوریج میں آگے آئے۔ کرکٹ کے فروغ کے حوالے سے یہ معاہدہ بہت اہمیت کا حامل ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ انہوں نے جتنی بھی کرکٹ کھیلی ہے اس میں یہ دیکھا ہے کہ پاکستان سے زیادہ کسی ملک میں ٹیلنٹ نہیں ہے اور ہمارا ٹیلنٹ سسٹم نہ ہونے کے باوجود ابھر کر سامنے آتا رہا ہے۔ پرانے سسٹم کی وجہ سے ٹیلنٹ آگے نہیں آتا تھا۔ اگر ہم ٹیلنٹ کو آگے لانے والے سسٹم اور کرکٹ کے ڈھانچے کو ٹھیک کر لیں تو پاکستان ناقابل شکست ہو جائے گا۔ دنیا میں کبھی یہ نہیں ہوا کہ کلب کرکٹ سے کوئی کھلاڑی براہ راست ٹیسٹ کرکٹ نہیں کھیلا ہو پاکستان میں ایسا صرف ٹیلنٹ کی وجہ سے ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے جن لوگوں کا اپنا مفاد تھا وہ سسٹم کو ماضی میں ٹھیک نہیں ہونے دیتے تھے اور پاکستان میں دنیا سے مختلف سسٹم تھا۔ دنیا میں جتنا اچھا مقابلہ ہوتا ہے اتنے ہی بہتر کھلاڑی آگے آتے ہیں۔ آسٹریلیا کی ٹیم دنیا کی سب سے بہترین کرکٹ ٹیم ہے کیونکہ ان کے پاس کرکٹ کا بہترین نظام ہے اور وہ میرٹ پر کھلاڑیوں کو آگے لاتے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ وہ پی سی بی کے چیئرمین مبارک باد پیش کرتے ہیں۔ پچھلے 40 سال سے کوشش کررہا تھاکہ کرکٹ کے سسٹم کو تبدیل کروں تاہم جب بھی نظام کو تبدیل کرنے کی کوشش کرتے ہیں اور اصلاحات لاتے ہیں تو اس میں مشکلات پییش آتی ہیں۔ نئے سسٹم سے بہترین کھلاڑی ابھر کر سامنے آئیں گے اور پاکستان کی ٹیم دنیا کی بہترین ٹیم بنے گی۔ انہوں نے کہا کہ ایک وقت تھا کہ پورے ہندوستان میں پی ٹی وی دیکھا جاتا تھا اور ہمارے ڈرامے بہت معیاری ہوتے تھے۔ وقت کے ساتھ ساتھ تبدیلی ضروری ہو جاتی ہے۔ بدقسمتی سے پی ٹی وی بھی مختلف وجوہات کی بنا پر پیچھے رہ گیا۔ ہم نے پی ٹی وی کی عظمت رفتہ کو بحال کرنا ہے۔ کھیلیں بہت دیکھی جاتی ہیں اس معاہدے سے پی ٹی وی کی آمدنی میں اضافہ ہو گا۔ پی ٹی وی کی فیس بڑھانے کے معاملہ پر بھی کابینہ میں غور کیا گیا تھا۔ اس سلسلہ میں پی ٹی وی کے بزنس پلان کا انتظار کررہے ہیں۔ اگر فیس بڑھائیں گے تو اس سے کیا بہتر نشریات پی ٹی وی دے سکے گا۔ لوگ نہیں چاہتے کہ وہ کرپٹ نظام کے لئے پیسہ دیں۔ لوگ دیکھنا چاہتے ہیں کہ پی ٹی وی بہتر کارکردگی دکھائے اور معیاری نشریات پیش کرے اور پرائیویٹ چینلز کے ساتھ مقابلہ کرے تب وہ فیس دیں اگر کارکردگی بہتر ہو اور بزنس پلان موصول ہوجائے تو فیس بھی بڑھا دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس معاہدے سے کرکٹ کو فروغ حاصل اور ملک و کرکٹ بورڈ کو بھی فائدہ ہو گا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ ڈیجٹلائزیشن کی طرف سے جائیں۔ جتنی اچھی سکرین نظر آئے گی اس سے لوگ زیادہ کھیلوں سے مستفید ہوں گے۔