وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے پاکستان میں یورپی یونین کی سفیر اینڈرولا کامینارا کی ملاقات، دو طرفہ تعلقات، کورونا وائرس کی وبا کی صورتحال سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال

اسلام آباد ۔ 16 ستمبر (اے پی پی) وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے پاکستان میں یورپی یونین کی سفیر اینڈرولا کامینارا نے بدھ کو وزارت خارجہ میں ملاقات کی۔ملاقات کے دوران دو طرفہ تعلقات، کرونا عالمی وبائی صورتحال سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔وزیر خارجہ نے کرونا وبائی چیلنج سے نمٹنے کے لئے یورپی یونین کی طرف سے پاکستان کی بروقت معاونت پر یورپی یونین کا شکریہ ادا کیا اور کورونا وائرس کی وبا کے معاشی مضمرات سے نمٹنے اور ترقی پذیر ممالک کو قرضوں کی ادائیگی پر سہولت فراہم کرنے کے حوالے سے وزیر اعظم عمران خان کی تجویز کی حمایت پر یورپی یونین کے کردار کو سراہا۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان نے محدود وسائل کے باوجود، کورونا وائرس کی وبا کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے موثر اقدامات کئے۔پاکستان نے نہ صرف اس عالمی وبا پر قابو پایا بلکہ معیشت کو پہیے کو بھی ازسر نو متحرک کیا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ آج کورونا وائرس کی وبا پر قابو پانے کے سلسلے میں ، پاکستان کی سمارٹ لاک ڈاؤن پالیسی کو دنیا بھر میں سراہا جا رہا ہے ۔وزیر خارجہ نے توقع ظاہر کی کہ یورپی یونین، دیگر ممالک کے شہریوں کی طرح پاکستانی شہریوں کو بھی یورپی ممالک میں داخلے کیلئے اہل قرار دے گا۔ پاکستان اور یورپی یونین کے مابین مختلف شعبوں میں تعاون اور باہمی روابط کا فروغ خوش آئند ہے۔وزیر خارجہ نے یورپی یونین کی سفیر کی توجہ، مقبوضہ جموں و کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کی طرف دلاتے ہوئے کہا کہ یورپی یونین انسانی حقوق کی داعی ہونے کے ناطے بھارت پر زور دے کہ وہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں مظالم کا سلسلہ فوری طور پر بند کرے اور بھارتی جیلوں میں مقید بے گناہ کشمیریوں کو فی الفور رہا کرے۔وزیر خارجہ نے افغان امن عمل، میں پاکستان کی مصالحانہ کوششوں، بین الافغان مذاکرات اور اس سلسلے میں اب تک ہونے والی پیش رفت کا بھی تذکرہ کیا۔فریقین کا مختلف شعبہ جات میں دو طرفہ تعاون کے فروغ کے حوالے سے مشاورت جاری رکھنے پر اتفاق کیا۔