میچز کو نتیجہ خیز بنانے کی غرض سے قائد اعظم ٹرافی کا نیا پوائنٹ سسٹم متعارف ،میچ جاری رکھنے سے انکار کرنے والی ٹیم کو 12 ماہ کے لیے معطل کردیا جائے گا

اسلام آباد۔23اکتوبر (اے پی پی):پاکستان کرکٹ بورڈ نے (کل) اتوار سے شروع ہونے والے پاکستان کے پریمیئرکرکٹ ٹورنامنٹ، قائد اعظم ٹرافی کے لیے نیا مگر مقابلے سے بھرپور پوائنٹ سسٹم متعارف کروادیا ہے۔ نئے پوائنٹ سسٹم کو متعارف کروانے کا مقصد ایونٹ کے زیادہ سے زیادہ میچز کو نتیجہ خیز بنانا ہے۔ کراچی کے چار مختلف وینیوز پر کھیلے جانے والے اس ایونٹ میں مجموعی طور پر 31 میچز کھیلے جائیں گے۔ٹورنامنٹ کا فائنل 5 روز پر مشتمل ہوگا۔ کارکردگی اور نتائج اخذ کرنے کے لیے کھلاڑیوں کو جارحانہ اور مثبت حکمت عملی کے ساتھ میدان میں اترنا ہوگا۔ قائداعظم ٹرافی فرسٹ کلاس ٹورنامنٹ کی نئی متعارف کروائی گئی پلیئنگ کنڈیشنز یہاں موجود ہیں۔نئے پوائنٹ سسٹم کے تحت ابتدائی اننگز کے 100 اوورز میں 400 رنز بنانے والی ٹیم کو 5 بیٹنگ پوائنٹس ملیں گے۔ اس سے بلے بازوں کے سٹرائیک ریٹ میں بہتری آئے گی۔ 100 یا اس سے کم اوورز میں سکور بنانے کی رفتار کے حساب سےبیٹنگ پوائنٹس کی ترتیب کے مطابق 200 رنز پر ایک پوائنٹ، 250رنز پر دو پوائنٹس، 300 رنز پر تین پوائنٹس،350 رنز پر چار پوائنٹس اور 400رنز بنانے والی ٹیم کو پانچ پوائنٹس ملیں گے ۔ اسی طرح بائولنگ کے شعبے کے پوائنٹ سسٹم میں بھی کچھ تبدیلی کی گئی ہے۔100 یا اس سے کم اوورز میں وکٹیں گرانے کے حساب سےباؤلنگ پوائنٹس کی ترتیب کچھ یوں ہے کہ100 یا اس سے کم اوورز میں وکٹیں گرانے کے حساب کے مطابق 3 وکٹیں گرانے والی ٹیم کو ایک پوائنٹ، 6 وکٹیں گرانے والی ٹیم کو دو پوائنٹس اور 8وکٹیں گرانے والی ٹیم تین پوائنٹس کی حقدار ٹھہرے گی۔
اس طرح پہلے باؤلنگ کرنے والی ٹیم اگر ابتدائی 100 اوورز میں حریف ٹیم کو 200 سے کم رنزپر آؤٹ کردیتی ہے تو اس صورتحال میں اسے مجموعی طور پر 6 پوائنٹس ملیں گے۔جس میں 3 پوائنٹس ابتدائی 100 اوورز میں 8سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے اور 3 پوائنٹس حریف ٹیم کو 200 سے کم رنز پر محدود کرنے پر ملیں گے۔ 100 یا اس سے کم اوورز میں سکور کے حساب سےباؤلنگ پوائنٹس کی ترتیب کے مطابق300 سے کم رنز پر پوری ٹیم کو آؤٹ کرنے پر ایک پوائنٹ، 250 سے کم رنز پر پوری ٹیم کو آؤٹ کرنے پر دو پوائنٹس اور 200 سے کم رنز پر پوری ٹیم کو آؤٹ کرنے پرتین پوائنٹس ملیں گے۔ پوائنٹ سسٹم کے ساتھ ساتھ پی سی بی نے اپنی پلیئنگ کنڈیشنز میں بھی چند تبدیلیاں کی ہیں۔جیسا کہ کھلاڑیوں میں سپرٹ آف کرکٹ کو فروغ دینے کی غرض سے میدان چھوڑ کر جانے پر عائد پابندی کو مزید سخت کردیا گیا ہے۔ اگر کوئی بھی ٹیم ایسی حرکت کرتی ہےتومیچ کو وہیں پر روک دیا جائے گا اور دوبارہ شروع نہیں کروایا جائے گا،اس ٹیم کے تمام کھلاڑیوں اور آفیشلز پر 12 ماہ کی پابندی عائد کردی جائے گی۔یہ پابندی پوری دنیا پر لاگو ہوگی۔اس ٹیم کے کھلاڑیوں اور آفیشلز کے کنٹریکٹس فوری طور پر ختم کردئیے جائیں گے۔مذکورہ ٹیم کو متبادل کھلاڑیوں اور آفیشلز کو سکواڈ میں شامل کرکے ٹورنامنٹ جاری رکھنے کی اجازت ہوگی۔ اس میچ میں حاصل کیے گئے مذکورہ ٹیم کے تمام پوائنٹس ختم کردئیے جائیں گے اور حریف ٹیم کو زیادہ سے زیادہ پوائنٹس ایوارڈ دیئے جائیں گے۔ دوسری جانب کووڈ۔19 کی صورتحال کو پیش نظر رکھتے ہوئے تمام ٹیموں کوکووڈ۔19 متبادل کھلاڑی کو سکواڈ میں شامل کرنے کی اجازت ہوگی۔ یہ متبادل لائک ٹو لائک کی بنیاد پر اور صرف اس وقت حاصل کیا جاسکے گا کہ جب کسی کھلاڑی کا کووڈ۔19 ٹیسٹ مثبت آیا ہو۔ آئی سی سی قوانین کے مطابق پی سی بی بھی کن کشن یا کووڈ۔19 کے متبادل کھلاڑی کی اجازت دے رہا ہے۔