وزیر اعظم عمران خان کے زیر صدارت پاکستان ریگولیٹری ماڈرنائزیشن انیشیٹو(پی آر ایم آئی) کا چوتھا اجلاس

کوئٹہ۔19اکتوبر (اے پی پی):وزیر اعظم عمران خان کے پاکستان ریگولیٹری ماڈرنائزیشن انیشیٹو(پی آر ایم آئی) کا چوتھا اجلاس اسلا م آباد میں وزیر اعظم کے مشیر برائے تجارت و سرمایہ کاری عبدالرزاق دائود کی زیر صدارت ہوا جس میں وزیر اعظم کے مشیر برائے ادارہ جاتی اصلاحات ڈاکٹر عشرت حسین سمیت چاروں صوبوں کے سرمایہ کاری بورڈ حکام نے شرکت کی، بلوچستان کی نمائندگی بلوچستان سرمایہ کاری بورڈ کے چیف ایگزیکٹو فرمان زرکون اور دیگر حکام نے کی، اجلاس میں کاروبار میں آسانی سے متعلق سیل کے قیام پر بلوچستان سرمایہ کاری بورڈ کی تعریف کی گئی، شرکاءنے بلوچستان سرمایہ کاری بورڈکی جانب سے اسلام آباد میں آفس کے قیام اور کراچی و گوادر میں مجوزہ د فاترکے فیصلے کو خصوصی طور پر سراہتے ہوئے کہا کہ یہ ایک تاریخی اقدام ہے دیگرصوبوں کے سرمایہ کاری بورڈز کو بھی اس کی تقلید کرتے ہوئے گوادر میں دفاتر قائم کرنے چاہئیں تاکہ سرمایہ کاروں کو سہولت ملنے کیساتھ ساتھ گوادر پورٹ سے فوائد حاصل کئے جا سکیں، فرمان زرکون نے اجلاس کو بلوچستان میں کاروبار میں آسانی کے سیل اور سرمایہ کاری و تجارتی سرگرمیوں کے فروغ کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ہم ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ ایک ون ونڈو سہولت مرکزبھی کھول رہے ہیں،جس کا مقصد ان مقامی سرمایہ کاروں کو سہولت فراہم کرنا ہے جو آن لائن رسائی نہیں رکھتے،اجلاس میں اس اقدام کی بھی تعریف کی گئی،اس موقع پرسوالات وجوابات کا سیشن بھی ہوا، فرمان زرکون نے کہا کہ وزیر اعلیٰ جام کمال خان عالیانی کی قیادت میں بلوچستان سرمایہ کاری بورڈ نے کاروبار میں آسانی کے سیل پر پیشرفت کی اورصوبے کی تاریخ میں پہلی مرتبہ اس طرح کا اقدام اٹھایا گیا،انہوں نے کہا کہ (ایز آف ڈوئنگ بزنس سیل) میں عالمی بینک کے کاروبار میں آسانی سے متعلق معیارات کو مدنظر رکھا گیا ہے، اہم پہلو یہ بھی ہے کہ بلوچستان سرمایہ کاری بورڈ نے انتہائی قلیل مدت میں اس سیل کو فعال بنایا ہے، اس سیل کے ذریعے کاروبارکی رجسٹریشن، لینڈ لیز، ٹیکس ادائیگی، متعلقہ محکموں سے دستاویزات لائسنس اور این او سی کاحصول اور دیگر سہولیات و معلومات اب ون ونڈو آپریشن کے ذریعے حاصل کی جا سکتی ہیں