حکومت انتخابی اصلاحات اور سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ کو ختم کرنے کیلئے سنجیدہ کوششیں کر رہی ہے، مشیر پارلیمانی امور ڈاکٹر بابراعوان

اسلام آباد۔21نومبر (اے پی پی):وزیراعظم کے مشیر برائے پارلیمانی امور ڈاکٹر بابر اعوان نے کہا ہے کہ حکومت انتخابی اصلاحات اور سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ کو ختم کرنے کیلئے سنجیدہ کوششیں کر رہی ہے، حکومت اپوزیشن جماعتوں کی مناسب تجاویز پر غور کرے گی، جو لوگ مخالفت کریں گے وہ قوم کے سامنے بے نقاب ہوں گے، اپوزیشن جماعتیں اپنے بدعنوان قائدین اور مفروروں کیلئے رعایت مانگ رہی ہیں، ان کے جلسے جلوسوں میں جان نہیں ہے، حکومت اپنی آئینی مدت پوری کرے گی۔ ہفتہ کو نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ میں بدقسمتی سے ہر انتخابات کو متنازعہ بنا دیا جاتا ہے، حکومت نے انتخابات کو صاف، شفاف اور آزادانہ بنانے کیلئے الیکٹرانک ووٹنگ کا نظام متعارف کرانے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ کوئی بھی انتخابات پر انگلی نہ اٹھا سکے۔ ڈاکٹر بابر اعوان نے کہا کہ 2013ءانتخابات میں دھاندلی کے حوالے سے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے چار حلقے کھولنے کا مطالبہ کیا تھا، جب حلقے کھلے تھے تو چاروں میں دھاندلی ثابت ہوئی تھی، 2018ءانتخابات کو عالمی اداروں نے بھی بہترین قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جو کام گزشتہ حکومتوں نے نہیں کئے وہ وزیراعظم عمران خان کر رہے ہیں، ان کے علاوہ کسی جماعت نے سینیٹ انتخابات میں شو آف ہینڈ کی بات نہیں کی، ہارس ٹریڈنگ کے خاتمے کیلئے اپوزیشن جماعتوں کو ترامیم میں حکومت کا ساتھ دینا چاہیے۔ مشیر پارلیمانی امور نے کہا کہ اپوزیشن جماعتیں کبھی متحد نہیں ہو سکتیں کیونکہ ان کے مفادات اور سمت الگ ہے، گلگت بلتستان انتخابات میں بھی پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) نے ایک دوسرے کو ہرایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم کے فورم سے اپوزیشن کے بدعنوان قائدین کو کرپشن کیسز سے بچانے کیلئے سہولت کاری ہو رہی ہے، اپوزیشن کے جلسوں میں کوئی جان نہیں، حکومت اپنی آئینی مدت پوری کرے گی۔ ڈاکٹر بابر اعوان نے کہا کہ مریم نواز جلسوں میں نواز شریف کو بہادر بنا بنا کر پیش کر رہی ہیں، اگر وہ واقعی میں بہادر لیڈر ہیں تو وطن واپس آ کر عدالتوں میں اپنے بدعنوانی مقدمات کا سامنا کریں۔ انہوں نے کہا کہ مریم نواز اور بلاول بھٹو نے گلگت بلتستان میں انتخابی مہم کے دوران لوگوں کو بڑے خواب دکھائے لیکن لوگوں نے ان کے بیانیے کو مسترد کرتے ہوئے پی ٹی آئی کو اکثریت کے ساتھ کامیاب کرایا، پی ٹی آئی نو سیٹیں جیتی ہے اس کے باوجود اپوزیشن جماعتیں دھاندلی کا شور مچا رہی ہیں۔ مشیر پارلیمانی امور نے کہا کہ گلگت بلتستان چیف الیکشن کمیشن نے بار بار اپوزیشن سے کہا ہے کہ اگر ان کے پاس دھاندلی کے ثبوت ہیں تو پیش کریں۔