کورونا وائرس کی دوسری لہر کے پھیلائو کو روکنے کیلئے زیادہ احتیاط کرنے کی ضرورت ہے، معاون خصوصی صحت ڈاکٹر فیصل سلطان

اسلام آباد۔21نومبر (اے پی پی):وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی دوسری لہر کے پھیلائو کو روکنے کیلئے زیادہ احتیاط کرنے کی ضرورت ہے، کورونا ایس او پیز اختیار کئے بغیر وبا سے نمٹنا نا ممکن ہے، جلسوں کے حوالے سے تمام سیاسی جماعتوں کے رہنمائوں کو مل کر کام کرنا ہو گا، حکومت ویکسین کے حصول کیلئے کوشش کر رہی ہے۔ ہفتہ کو نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کورونا کی پہلی لہر کے دوران ایک چیز واضح ہوئی ہے کہ اس بیماری کے پھیلائو کا احتیاط اور بے احتیاطی سے گہرا تعلق ہے، پہلے بھی جب لوگ لاک ڈائون سے نکلے تھے تو بے احتیاطی کی وجہ سے وبا عروج پر آ گئی تھی، اسی طرح اگر عوام نے حفاظتی اقدامات کو نظر انداز کیا تو دوبارہ بیماری کے پھیلائومیں عروج آ سکتا ہے، حکومت نے ایس او پیز جاری کر دیئے ہیں جن پر عمل درآمد کرانا ضروری ہے۔ ڈاکٹر فیصل سلطان نے کہا کہ ٹیسٹنگ صلاحیت ہمارا مسئلہ نہیں، لوگوں کی سوچ بدلنے کی ضرورت ہے، اس وقت پاکستان میں روزانہ 70 ہزار سے زائد ٹیسٹنگ کی صلاحیت موجود ہے اور ہم ٹیسٹنگ کیلئے جدید اقدامات اٹھا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دنیا میں کورونا ویکسین کے حوالے سے اچھی خبریں آ رہی ہیں، حکومت ویکسین کے حصول کیلئے کوششیں کر رہی ہے اور اس کیلئے فنڈز بھی مختص کر دیئے گئے ہیں، ہماری کوشش ہے کہ ویکسین آنے تک صحت کے نظام پر دباﺅ نہ آئے، لوگوں کو اس غلط فہمی سے نکالنا ہو گا کہ ہم کورونا سے گزر گئے ہیں، اگر صحت کے نظام پر دبائوآیا تو معاشرے کیلئے شدید خطرہ پیدا ہو جائے گا۔ معاون خصوصی نے کہا کہ پاکستان میں بھی چینی کمپنی کے کورونا کلینیکل ٹرائلز کامیابی کے ساتھ جاری ہیں اور ابھی تک اچھے نتائج موصول ہو رہے ہیں، امید ہے کہ اگلے سال کے شروع تک اس کے ٹرائلز مکمل ہو جائیں گے۔