کامیاب پاکستان پروگرام اقتصادی طورپرکمزورطبقات کی حالت زارمیں بہتری کے حوالے سے حکومت کا کلیدی پروگرام ہے، وفاقی وزیرخزانہ شوکت ترین کا اجلاس سے خطاب

اسلام آباد۔17ستمبر (اے پی پی):وفاقی وزیرخزانہ شوکت ترین نے کہاہے کہ کامیاب پاکستان پروگرام معاشرے کے اقتصادی طورپرکمزورطبقات کی حالت زارمیں بہتری اورلوگوں کو مالی طورپربااختیاربنانے کے حوالے سے حکومت کا کلیدی پروگرام ہے۔ ملکی تاریخ میں پہلی باربینکوں کو چھوٹے قرضے فراہم کرنے والے اداروں کے ذریعہ معاشرے کے معاشی طورپرغریب اورکمزورطبقات کو مربوط کردیا گیاہے۔ انہوں نے یہ بات جمعہ کویہاں کامیاب پاکستان پروگرام کی سٹیئرنگ کمیٹی اورمشاورتی بورڈ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

اجلاس میں تمام متعلقہ شراکت داروں کی مشاورت سے کامیاب پاکستان پروگرام کے ڈیزائن اور خدوخال کا جائزہ لیا گیا اوراس کی منظوری دی گئی، اجلاس میں تفصیلی مشاورت کے بعد فیصلہ کیا گیاکہ ہول سیل لینڈرز (بینکس) کے انتخاب کیلئے نیلامی کا جامع طریقہ کاراختیارکیاجا ئے گا جو چھوٹے قرضے فراہم کرنے والے اداروں کے ساتھ مربوط ہوں گے۔فنڈز کی تقسیم کے حوالہ سے سہ ہول سیل لینڈرز (بینکس) کی کارگردگی کا سہ ماہی بنیادوں پرجائزہ لیا جائے گا ۔

حکومت بینکوں کورسک شئیرنگ کی بنیادپر50 فیصد کی گارنٹی دے گی۔ اس سے فنڈز کی تقسیم کے حوالہ سے شفافیت آئے گی ۔ کامیاب پاکستان پروگرام پورٹل کا ایک اورنمایاں خاصیت کامیاب پاکستان انفارمیشن سسٹم ہے۔ اس نظام سے ایک ٹال فری نمبرسے پاکستان انفارمیشن سسٹم کو این ٹی سی کے زریعہ مربوط کیا جائیگا۔یہ پورٹل احساس ڈیٹا اورنادرا کے ساتھ مربوط ہوگا جس سے مائیکروفنانس کے اداروں کو احسن انداز میں ویری فیکشن میں مددملیگی۔

وزیرخزانہ شوکت ترین نے کہاکہ کامیاب پاکستان پروگرام معاشرے کے اقتصادی طورپرکمزورطبقات کی حالت زارمیں بہتری اورلوگوں کو مالی طورپربااختیاربنانے کے حوالے سے حکومت کا کلیدی پروگرام ہے۔ ملکی تاریخ میں پہلی باربینکوں کو چھوٹے قرضے فراہم کرنے والے اداروں کے زریعہ معاشرے کے معاشی طورپرغریب اورکمزورطبقات کو مربوط کردیا گیاہے۔اس لئے پروگرام کے آغاز سے قبل ہی حددرجہ احتیاط برتی گئی ہے۔

وزیرخزانہ نے کہاکہ پروگرام کی کامیابی کیلئے تمام متعلقہ شراکت داروں سے مشاورت کی گئی ہے، ملک کے تمام علاقوں کی شمولیت کویقینی بنانے کیلئے پروگرام کو مرحلہ واربنیادوں پرشروع کیا جائیگا، پہلے مرحلہ میں خیبرپختونخوا، بلوچستان اورپنجاب، سندھ، گلگت بلتستان اورآزادکشمیرکے پسماندہ اضلاع پروگرام میں شامل ہوں گے۔انہوں نے کہاکہ ازسرنو جائزہ شدہ تجاویز اورسفارشات منظوری کیلئے اقتصادی رابطہ کمیٹی اورکابینہ کے سامنے رکھی جائے گی ۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی عثمان ڈارنے کہاکہ کامیاب پاکستان پروگرام ہمارے باصلاحیت نوجوانوں کیلئے آمدنی کے زرائع بڑھانے میں اہمیت کا حامل ہے اوراس سے ملک میں غربت کے شیطانی چکر کو ختم کرنے میں مدد ملے گی ۔

اجلاس میں ڈپٹی گورنرسٹیٹ بینک ڈاکٹرسیماکمال،چیئرمین ایس ای سی پی عامرخان، چیئرمین اخوت ڈاکٹرامجدثاقب، سی ای اواین آرایس پی ڈاکٹرراشد باجوہ، چیئرمین آرایس پی این شعیب سلطان، کنوینرکامیاب پاکستان پروگرام ظفرمسعود،چیئرمین پی بی اے محمداورنگزیب، میزان بینک کے صدر عرفان صدیقی، بینک الفلاح کے صدر عاطف باجوہ اورسینئرافسران نے شرکت کی۔