وفاقی وزیر برائے قومی غذائی تحفظ و تحقیق سید فخر امام کی زیر صدارت نیشنل پرائس مانیٹرنگ کمیٹی کا ہفتہ وار اجلاس

اسلام آباد۔13اکتوبر (اے پی پی):وفاقی وزیر برائے قومی غذائی تحفظ و تحقیق سید فخر امام کی زیر صدارت نیشنل پرائس مانیٹرنگ کمیٹی (این پی ایم سی) کے ہفتہ وار اجلاس کا انعقاد ہوا۔ قیمتوں کے حساس اعشاریے (ایس پی آئی )میں گزشتہ دو ہفتے کی کمی کے بعد ہفتہ وار 1.21فیصد کا اضافہ ہوا ہے ۔ترجمان وزارت خزانہ کی جانب سے بدھ کو جاری پریس ریلیز کے مطابق صوبہ پنجاب اور اسلام آباد میں 20 کلو آٹے کے تھیلے کی قیمت 1100روپے ہے جبکہ صوبہ سندھ میں 1465روپے سے زائد ہوگئی ہے ۔

اجلاس کو بتایا گیا کہ سندھ حکومت کی طرف سے وفاقی حکومت کی مقررکردہ قیمت پرگندم کی ریلیز 16اکتوبر سے شروع کرنے کی یقین دہانی کرائی گئی ہے ۔این پی ایم سی نے اسلام آباد اور پنجاب میں روزانہ کی بنیاد پر گندم کی ریلیز کو یقینی بنانے کے اقدامات کو سراہا۔ وزیر غذائی تحفظ و تحقیق نے پورے ملک میں وفاقی حکومت کی مقرر کردہ قیمتوں پرآٹے کی ریلیز کو یقینی بنانے کے لئے صوبہ سندھ، بلوچستان اور خیبر پختونخوا کے اقدامات کو سراہا ۔ اجلاس کو سیکریٹری خوراک نے بتایا کہ صوبوں اور پاسکو کے پاس اس وقت وافر مقدارمیں گندم کا ذخیرہ موجود ہے۔

سیکریٹری صنعت و پیداوار نے این پی ایم سی کوآگاہ کیا کہ صوبہ سندھ کے کچھ اضلاع میں گنے کی کرشنگ 25اکتوبر سے شروع ہو جائے گی، حکومت کی ترجیح ہے کہ صوبہ پنجاب میں گنے کی کرشنگ نومبر کے اوائل سے شروع کی جائے۔ انہوں نے کہاکہ ان شاء اللہ اس سال گنے کی پیداوار گزشتہ سال کی نسبت زیادہ ہوگی۔ سستا سہولت بازار اور یوٹیلیٹی سٹورز پر درآمدکی گئی چینی 90روپے فی کلو گرام پرعوام کو فراہم کی جائے گی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ کووڈ19کی وجہ سے بند ریسٹورنٹس اور شادی ہالز کے دوبارہ کھلنے کی وجہ سے مرغی کی طلب میں اضافہ کے باعث قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے تاہم آئندہ چند ہفتوں میں سپلائی کی بہتری سے قیمتوں میں استحکام آئے گا۔

سیکریٹری صنعت و پیداوار نے کمیٹی کو عالمی مارکیٹ میں سویا بین اور پام آئیل کی بڑھتی ہوئی قیمتوں پر بھی بریفنگ دی۔انہوں نے کہاکہ ایف بی آر تیل کی درآمد پر ڈیوٹی کم کرنے پر نظر ثانی کر رہا ہے تاکہ صارفین کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دیا جا سکے۔اجلاس میں معاون خصوصی برائے غذائی تحفظ جمشید اقبال چیمہ ، قومی غذائی تحفظ و تحقیق کے سیکرٹری ، اقتصادی مشیر فنانس ڈویژن ، ایڈیشنل سیکرٹری وزارت صنعت و پیداوار ، ایڈیشنل سیکرٹری تجارت ، ڈپٹی کمشنر اسلام آباد ، ممبر پی بی ایس اور صوبائی محکمہ خوراک کے نمائندوں کے علاوہ دیگر اعلیٰ حکام نے بھی شرکت کی ۔