سمندر پار مقیم پاکستانیوں نے سات ماہ کے دوران 16.47 ارب ڈالر پاکستان بھجوائے، سٹیٹ بینک

پاکستان اورسعودی عرب کے درمیان دوطرفہ تجارت کے حجم میں 25.17 فیصدکانمایاں اضافہ
پاکستان اورسعودی عرب کے درمیان دوطرفہ تجارت کے حجم میں 25.17 فیصدکانمایاں اضافہ

اسلام آباد۔17فروری (اے پی پی):رواں مالی سال کے دوران سعودی عرب ‘ متحدہ عرب امارات’ برطانیہ اور امریکہ کا شمار پاکستان کو ترسیلات زر بھیجنے والے بڑے ممالک میں ہوتا ہے۔ مالی سال کے ابتدائی سات ماہ میں جولائی تا جنوری2020-21 کے دوران سمندر پار مقیم پاکستانیوں کی جانب سے 16.47 ارب ڈالر پاکستان بھجوائے گئے ہیں۔ سٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کے اعدادو شمار کے مطابق جاری مالی سال میں سب سے زیادہ ترسیلات زر سعودی عرب سے کی گئی ہیں۔ سعودی عرب میں کام کرنے والی پاکستانی افرادی قوت نے مالی سال کے ابتدائی سات مہینوں کے دوران 4.51 ارب ڈالر کی ترسیلات زر کی ہیں۔ اسی طرح پاکستان کو ترسیلات زر بھیجنے والا دوسرا بڑا ملک متحدہ عرب امارات رہا ہے جہاں سے جولائی تا جنوری 2020-21 کے دوران 3.45 ارب ڈالرز کی ترسیلات زر کی گئی ہیں۔ ایس بی پی کے مطابق اس حوالہ سے برطانیہ تیسرا بڑا ملک ہے اور برطانیہ میں مقیم پاکستانی برادری نے اسی عرصہ کے دوران وطن عزیز میں 2.18 ارب ڈالر بھیجوائے ہیں۔ مزید برآں مختلف خلیجی ممالک سے وصول ہونے والی ترسیلات زر کا حجم 1.89 ارب ڈالر کے ساتھ چوتھے نمبر پر رہا ہے۔یورپی یونین کے ممالک میں مقیم پاکستانی برادری نے رواں مالی سال میں اپنے عزیز و اقارب اور اہل خانہ کو 1.5 ارب ڈالر بھجوائے ہیں۔ اس طرح یورپی یونین کے ممالک سے پانچویں نمبر پر سب سے زیادہ ترسیلات زر کی وصولیاں ہوتی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق امریکی بھی زیادہ ترسیلات زر بھجوانے والے ممالک میں شامل ہے اور امریکہ میں مقیم پاکستانی برادری نے جاری مالی سال میں جولائی تا جنوری 2020-21 کے دوران 1.4 ارب ڈالر کی ترسیلات زر کی ہیں۔