اقتصادی ڈپلومیسی، یورپ کے ساتھ پاکستان کے معاشی رابطے کی کلید ہے، ظہیر اے جنجوعہ

اقتصادی ڈپلومیسی، یورپ کے ساتھ پاکستان کے معاشی رابطے کی کلید ہے، ظہیر اے جنجوعہ
اقتصادی ڈپلومیسی، یورپ کے ساتھ پاکستان کے معاشی رابطے کی کلید ہے، ظہیر اے جنجوعہ

برسلز ۔7اپریل (اے پی پی):بیلجیئم میں پاکستان کے سفیر ظہیر اے جنجوعہ نے کہا ہے کہ اقتصادی ڈپلومیسی، یورپ کے ساتھ پاکستان کے معاشی رابطے کی کلید ہے۔یہ بات انہوں نے بدھ کو پاکستان ٹیکسٹائل کونسل کی سربراہ صالحہ آصف سے پاک یورپی یونین تجارتی تعلقات کے حوالے سے آن لائن ملاقات کے دوران کہی۔

سفیر نے یورپ کے ساتھ پاکستان کی معاشی رسائی میں اضافے کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اقتصادی ڈپلومیسی پاکستان کی معاشی رسائی کو یورپ میں مستحکم کرنے اور بڑھانے کی کلید ہے۔ انہوں نے بتایا کہ جی ایس پی پلس اسکیم نے پاکستان اور یورپی یونین کے مابین دوطرفہ تجارت کو بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

سفیر ِنے کہا کہ جی ایس پی پلس پاکستان اور یورپی یونین کے لئے باہمی فائدہ مند رہا ہے۔ 2014 میں جی ایس پی پلس کے آغاز سے ہی یوروپی یونین کو پاکستان کی برآمدات میں 65 فیصد کا اضافہ دیکھا گیا ہے جبکہ پاکستان کو یورپی یونین کی برآمدات میں 44 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ سفیر ِ پاکستان نے ترجیحی مارکیٹ تک رسائی کے ذریعہ پیدا ہونے والے ممکنہ مواقع پر تبصرہ کرتے ہوئے یورپی یونین میں پاکستانی برآمدات میں قدر اضافے اور تنوع پر زور دیا ۔

حکومت پاکستان کی برآمدات کے شعبے کی ترقی کے لئے جاری کوششوں کو اجاگر کرتے ہوئے سفیر ِ پاکستان نے پاکستانی برآمد کنندگان سے تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ انہوں نے براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کو راغب کرنے کے لئے حکومت کے اقدامات پر بھی روشنی ڈالی اور کہا کہ پچھلے دو سالوں میں پاکستان ’’ کاروبار میں آسانی ‘‘ کی درجہ بندی میں 39 درجے آگے بڑھا ہے۔

صالحہ آصف نے پاکستان اور یورپ کے مابین تجارتی تعلقات کو فروغ دینے میں سفارتخانے کی کاوشوں کو سراہا۔ انہوں نے سفیر کو آر اینڈ ڈی کے ذریعے ٹیکسٹائل کی برآمدات بڑھانے کے لئے پی ٹی سی کے منصوبوں اور یورپی بلاک میں زیادہ سے زیادہ مارکیٹ تک رسائی کو محفوظ بنانے کی کوششوں کے بارے میں بھی آگاہ کیا۔