فوج کی تعیناتی سمیت دیگر ٹھوس اقدامات کی بدولت کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد میں نمایاں بہتری آئی ہے، عید پر اس رجحان کو برقرار رکھنے کی ضرورت ہے، اسد عمر کا ٹویٹ

اسلام آباد۔4مئی (اے پی پی):وفاقی وزیر منصوبہ بندی، ترقی ، اصلاحات و خصوصی اقدامات اور نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے سربراہ اسد عمر نے کہا ہے کہ فوج کی تعیناتی سمیت دیگر ٹھوس اقدامات کی بدولت کورونا سے بچائو کے لیے ایس او پیز پر عملدرآمد میں نمایاں بہتری آئی ہے۔ منگل کو اپنے ٹویٹ میں انہوں نے کہا کہ قومی سطح پر ایس او پیز پر عملدرآمد کی شرح 25 اپریل کو 34 فیصد تھی جو 3 مئی کو بڑھ کر 68 فیصد ہو گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ فوج کی تعیناتی اور مضبوط نفاذ سے ایس او پیز پر عملدرآمد بہتر ہوا‘این سی او سی کے سربراہ اسد عمر نے ایس او پیز کی تعمیل کی تفصیلات جاری کردیں۔ٹوئٹر پر تفصیلات جاری کرتے ہوئے اسد عمر نے کہا کہ ایس او پیز پر عمل پیرا ہونے میں نمایاں بہتری دیکھنے میں آئی ہے اور فوج کی تعیناتی سمیت مضبوط نفاذ کے اقدامات سے ایس او پیز میں بہتری آئی۔انہوں نے کہا کہ قومی سطح پرایس او پیز کی اوسط تعمیل دگنی ہوئی ہے، قومی سطح پر ایس او پیز کی تعمیل 25 اپریل کو 34 فیصد تھی اور 3 مئی کو 68 فیصد ہوگئی جب کہ عید پر ایس او پیز کی تعمیل کی سطح کو برقرار اور استوار رکھنے کی ضرورت ہے۔

اسد عمر کہنا تھاکہ ایس او پیز پر 3 مئی تک عملدرآمد سب سے زیادہ 88 فیصد وفاق میں ہوا اور سب سے کم ایس او پیز پر عمل درآمد سندھ میں 45 فیصد رہا جب کہ پنجاب میں 69 ،کے پی 66 اور بلوچستان میں 63 فیصد عملدرآمد ہوا۔وفاقی وزیر نے بتایا کہ دوسرے نمبر پر آزاد کشمیر میں ایس او پیز پر 82 فیصد عملدرآمد کیا گیا اور گلگت بلتستان میں کورونا ایس او پر 62 فیصد عملدرآمد کیا گیا۔